پاکستان کو ریاست مدینہ بنانا میری زندگی کا مقصد ہے، عمران خان

اسلا م آباد: وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مذہب کے معاملے پر کسی کے ساتھ زبردستی نہیں کی جا سکتی۔پاکستان کو ریاست مدینہ بنانا میری زندگی کا مقصد ہے۔

امریکی اسکالر شیخ حمزہ یوسف کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ جب انہوں نے سیاست شروع کی تو لوگ سیاست میں آنے سے ڈرتے تھے۔سیاست میں آیا تو طاقتور لوگوں نے کردار کشی کی ۔ مجھے مافیاز کا سامنا کرنا پڑا۔ آپ اپنی ناکامیوں سے سیکھتے ہیں۔میں نے دو دہائی تک دنیا بھر میں کھیلوں میں حصہ لیا اور میں نے بہت سی کامیابیاں سمیٹیں اور دھچکے بھی لگے لیکن مجھے اللہ نے سب سے بڑا تحفہ ایمان کی دولت سے نوازا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ مذہب کے معاملے میں کسی کے ساتھ زبردستی نہیں کی جا سکتی اور جب آپ ناکام ہوتے ہیں تو اپنی ذات کا تجزیہ کرتے ہیں۔ انا کسی بھی شخص کو برباد کر دیتی ہے لیکن سچا ایمان آپ کو اپنی انا پر کنٹرول کرنا سکھاتاہے۔کامیابی اور عزت صرف اللہ کی ذات دیتی ہے۔ مال و دولت نہیں انسان کے اندر غیرت کا ہونا بہت ضروری ہے۔ میرے نزدیک امیر وہ ہے جو اپنے ضمیر کا سودا نہیں کرتا۔قرآن انسان کو آزاد کر دیتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ مجھے یقین تھا کوئی بھی شخص میری بے عزتی نہیں کرسکتا یہ لوگ کچھ بھی کر لیں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ انا بدترین انسانی خصلت ہو سکتی ہے جبکہ میری تضیحک کے لیے اسکینڈلز اور فیک نیوز لائی گئیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان کو اسلامی فلاحی ریاست بنانے کے لیے سیاست میں آئے ۔پاکستان کو ریاست مدینہ بنانا میری زندگی کا مقصد ہے۔ قانون کی حکمرانی کے بغیر کوئی بھی معاشرہ آگے نہیں بڑھ سکتا۔میرٹ نہ ہوتو ااشرافیہ وسائل پر قابض ہوجاتی ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More