یکم مئی سے ملک میں لوڈشیڈنگ صفر ہے، خرم دستگیر

اسلام آباد: وفاقی کابینہ اجلاس کے بعد وفاقی وزراء مریم اورنگزیب ،اعظم نزیر تارڑ اور خرم دستگیر کی پریس کانفرنس، کابینہ کے فیصلوں سے آگاہ کیا۔

وفاقی کابینہ نے گورنر پنجاب کو ہٹانے کی سمری کی توثیق کردی۔ کابینہ نے 30 لاکھ میٹرک ٹن گندم درآمد کرنے کی اجازت دے دی۔ وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب کاکہنا ہے بجلی کی لوڈشیڈنگ سے متعلق جامع حکمت عملی کابینہ کو دی گئی۔ آج کابینہ میں متعدد فیصلے کیے گئے۔ کابینہ کو وزیراعظم کے دورہ سعودی عرب سے متعلق بھی آگاہ کیا گیا۔

وزیراطلاعات مریم اورنگزیب نے بتایا کہ کابینہ کو بجلی کی لوڈشیڈنگ اور اشیاء کی قیمتوں سے متعلق بریفنگ بھی دی گئی۔عوام کو ریلیف دینا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ کابینہ نے 30 لاکھ میٹرک ٹن گندم درآمد کرنے کی اجازت ایک فرد کے پاس ایک سے زیادہ پاسپورٹ کی منسوخی، چینی اور آٹے کی قیمتوں کو برقرار رکھنے اور ڈی جی آئی بی کی تعیناتی کی منظوری دی۔

وفاقی وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ گزشتہ 6 ہفتوں سے کچھ افراد آئین سے کھلواڑ کررہے ہیں۔ کچھ لوگ آئین سے ماورا اقدامات کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ کوئی عہدے دار اپنے آئینی حدود سے تجاوز نہ کرے کابینہ نے وزیراعظم کے فیصلوں کی توثیق کی اور گورنر پنجاب کو ہٹانے کی سمری کی توثیق کی۔

وزیر توانائی خرم دستگیر نے کہا کہ لوڈشیڈنگ کو محدود کرنے کے لیے کابینہ سے اضافی وسائل کی درخواست کی ہے۔ یکم مئی سے ملک میں لوڈشیڈنگ صفر ہے۔ آج ملک میں بجلی کی پیداوار 22 ہزار 600 میگاواٹ سے زیادہ ہے۔

خرم دستگیر نے کہا کہ سابق حکومت کی نااہلی کی وجہ سے بجلی کے کارخانے بند ہوئے۔ زیادہ خسارے والے فیڈرز پر لوڈ منیجمنٹ کی جاتی ہے۔ وزیراعظم نے ہدایت کی ہے کہ لوڈشیڈنگ سے متعلق شہری اور دیہی علاقوں میں توازن قائم کیا جائے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More