لاہور ہائیکورٹ : دوسری شادی کرنے والے شوہر کی چھ ماہ اور جرمانے کی سزا معطل

لاہور ہائیکورٹ نے پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے والے شوہر کی چھ ماہ اور جرمانے کی سزا معطل کردی۔ عدالت نے غلام حسین کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دے دیا۔ عدالت نے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے وکلا کو دلائل کیلئے بھی طلب کرلیا۔

پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے والے شوہر کی سزا لاہور ہائیکورٹ سے معطل، جسٹس عالیہ نیلم نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے چھ ماہ کی سزا پانے والے ملزم کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دے دیا۔ عدالت نے غلام حسین کی سزا کے خلاف اپیل سماعت کیلئے منظور کرتے ہوئے فریقین کو نوٹس جاری کردئیے۔

درخواستگزار کی جانب سے موقف اپنایا گیا تھا کہ پہلی بیوی نیلم امتیاز سے اولاد نہ ہونے کی وجہ سے کلثوم بی بی سے شادی کی۔ پہلی بیوی نیلم امتیاز نے طلاق کے تین ماہ بعد فیملی ایکٹ پر استغاثہ دائر کیا جبکہ پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے پر مجسٹریٹ نے پانچ لاکھ جرمانہ اور چھ ماہ کی قید سنائی۔ درخواستگزار کے مطابق مجسٹریٹ کے پاس پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے پر فیملی ایکٹ کے تحت سزا دینے کا اختیار نہیں ۔ ملزم غلام حسین نے سیشن جج کی اپیل خارج کرنے کے فیصلے کے خلاف لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا تھا مطر غلام حسین کو چار فروری دوہزار بائیس کو لاہور ہائیکورٹ سے گرفتار کیا گیا تھا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More