حساس ادارے کے افسرپر تشدد، نون لیگی رہنما گرفتار

حساس ادارے کے افسر حارث پر تشدد کے معاملے پر مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ سلمان رفیق اور حافظ نعمان کی گرفتاری دے دی ۔

پولیس کی جانب سے خواجہ سلمان رفیق اور حافظ نعمان کو مقدمے میں نامزد کیا گیا۔مقدمہ مدعی کے مطابق خواجہ سلمان اور حافظ نعمان کی ایماء پر حارث کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ دونوں ساتھ والی گاڑی میں موجود تھے۔

خواجہ سلمان رفیق کا کہنا تھا کہ پولیس نے کہا کہ گاڑی اور اپنے بندے ہمارے حوالے کر دیں۔ہم نے چاروں لوگوں کو پولیس کے حوالے کر دیا ہے۔ اس واقعے سے ہمارا تعلق نہیں ہے۔ ہماری گاڑی اس وقت وہاں موجود نہیں تھی، اگر ہم موقع پر موجود ہوتے تو ایسا واقعہ نہ ہوتا تاہم ہمارے اسٹاف کو پہلے پولیس کو اطلاع کرنی چاہیے تھی۔

حافظ نعمان کا کہنا تھا کہ ہم تصور بھی نہیں کرسکتے تھے کہ ایسا واقعہ ہوگا۔ میجر حارث اور ان کی فیملی کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہیں۔ ہم اپنے آپ کو قانون سے بالاتر نہیں سمجھتے۔ کل افسوس ناک واقعہ رونما ہوا۔مذمت کرتے ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More