سابق حکومت کی ناقص پالیسیوں سے بجلی کا مسئلہ درپیش ہے، خرم دستگیر

اسلام آباد: وفاقی وزیر بجلی خرم دستگیر نے کہا ہے کہ بجلی کے معاملات کو حل کے لیے پوری کوشش کر رہے ہیں ۔حویلی بہادر شاہ پاور پلانٹ کی مرمت کے باعث لوڈشیڈنگ ہو رہی ہے۔

وزیر مملکت برائے پٹرولیم مصدق ملک کے ہمراہ اسلام آباد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ سابق حکومت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے آج ملک کو بجلی کی کمی کا مسئلہ درپیش ہے۔ مسلم لیگ ن کی حکومت نے 2018میں 11 ہزار میگاواٹ بجلی کااضافہ کر کے لوڈشیڈنگ ختم کر دی تھی ۔بجلی کا ٹیرف بھی 2018 کےمقابلے میں دوگنا ہو گیا ہے۔

وفاقی وزیر برائے بجلی خرم دستگیر نے کہا کہ گزشتہ حکومت نے ڈسکوز کی ریکوریوں میں اضافہ نہیں کیا جبکہ توانائی کے شعبے میں گردشی قرضے میں بھی اضافہ ہوا۔

وزیر مملکت پیٹرولیم ڈویژن مصدق ملک نے کہا کہ صرف ایندھن فراہم نہ ہونے سے 9ہزارمیگاواٹ بجلی بند رہی۔ مارکیٹ میں جب سستی ایل این جی مل رہی تھی تو سابق حکومت نےنہیں خریدی۔

وزیر مملکت نے کہا کہ چار سال حکومت میں رہنے والے آج سوالات اٹھارہے ہیں۔وزراء نے کہا کہ و زیراعظم نے لوڈشیڈنگ کے خاتمے کیلئے فول پروف پالیسی بنانے کی ہدایت کی ہے۔ آئندہ ماہ متوقع گرمی کے پیش نظر ہنگامی اقدامات کررہے ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More