خواجہ آصف نے نئے انتخابات معاملہ ایوان میں اٹھا دیا

اسلام آباد: امیر جے یو آئی مولانا فضل الرحمان کے بعد حکومتی رکن خواجہ محمد آصف نے نئے انتخابات کا معاملہ ایوان میں اٹھا دیا۔

اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف کی زیرصدارت قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا۔ خواجہ آصف نے ایوان میں انتخابات کرانے کا مطالبہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ الیکشن لازمی ہونے چاہیئں۔ عوامی مینڈیٹ ہی اس صورتحال کا حل ہے۔ہمیں سب کو ملکر اس چیلنجز کا حل نکالنا ہوگا۔ ہمیں باہر سے نہیں اندر سے خطرہ ہے۔

پی ٹی آئی کے منحرف رکن نور عالم خان کا کہنا تھا مجھ پر الزام لگایا گیا ہے کہ پیسے لئے ہیں۔ واضح کردوں میں نے کسی سے بھی 20 کروڑ نہ لیے نہ اپنا ضمیر بیچا۔ میں خانہ کعبہ جاکر حلف اٹھا کر یہ بات کرنے کے لیے تیار ہوں ۔ بدقسمتی سے یہاں غلط بیانیہ دیا جارہا ہے۔

بی این پی مینگل نے بلوچستان کے شہریوں کے ماورائے عدالتی قتل کے خلاف ایوان سے واک آوٹ کیا گیا۔ آغا حسن بلوچ کا کہنا تھا بلوچستان میں ماورائے عدالت بلوچوں کا قتل عام جاری ہے۔اس ملک میں بلوچوں کا خون سب سے سستا ہے۔اس صورتحال میں ہم کس طرح حکومت میں بیٹھیں ۔

اسپیکر کی ہدایت پر لیگی رکن شزا فاطمہ خواجہ نے منگل کے روز نجی کاروائی کا ایجنڈا بحال کرنے کی تحریک پیش کی جس کی منظوری دے دی۔ اسپیکر قومی اسمبلی نے صدر مملکت کی جانب سے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب پر شکریہ کی تحریک کو نمٹا دیا۔خواجہ آصف کا کہنا تھا صدر نے کوئی ایسا خطاب نہیں کیا جس کے قصیدے پڑھے جائیں۔

پیپلز پارٹی کی رکن اسمبلی شگفتہ جمانی کا نکتہ اعتراض پر کہا کہ پارلیمنٹ لاجز مسجد کے موزن پر اعتراض اٹھا دیا اور کہاپارلیمنٹ لاجز کی مسجد میں تعینات موذن کی آواز سے بیزاری ہوتی ہے جس کی خواجہ آصف نے تائید کی۔ا سپیکر نے ارکان کے اعتراض پر سیکرٹریٹ کو ہدایت جا ری کر دیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More