قازقستان میں ہنگامے جاری،درجنوں افراد ہلاک

قازقستان میں سکیورٹی فورسز کا کہنا ہے کہ مرکزی شہر الماتے میں امن و امان بحال کرنے کی غرض سے حکومت مخالف مظاہرین کے خلاف ہونے والے آپریشن میں درجنوں افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

غیرملکی خبرایجنسی کے مطابق پولیس کی ترجمان نے کہا ہے کہ انھوں نے اُس وقت مظاہرین کے خلاف اقدامات کیے جب انھوں نے شہر کے پولیس سٹیشنوں پر قبضہ کرنے کی کوشش کی۔ مائع پیٹرولیم گیس کی قیمتوں میں ہونے والے اضافے کے بعد قازقستان کے کئی علاقوں میں مظاہرے پھوٹ پڑے تھے۔ جن میں حکام کے مطابق اب تک سکیورٹی فورسز کے اٹھارہ اہلکار ہلاک اور 353 زخمی ہو چکے ہیں۔

قازقستان کے صدر کی درخواست پر روس نے اپنے دستے بھیج دئے ہیں۔ قازقستان کے صدر کے مطابق روسی دستوں کی مدد سے ملک میں استحکام لایا جائے گا۔ قازقستان روس، بیلاروس، تاجکستان، کرغزستان اور آرمینیا کے اتحاد ’سی ایس ٹی او‘ کا رکن ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More