کراچی: غائب ہونے والی 14 سالہ لڑکی تا حال بازیاب نہ ہوسکی

کراچی: 16 اپریل کی سہ پہر گولڈن ٹاون کراچی سے غائب ہونے والی 14 سالہ دعائے زہرہ تا حال بازیاب نہ ہوسکی۔

اہلخانہ کا دعویٰ ہے کہ دعا کو اغوا کیا گیا ہے جبکہ پولیس کا کہنا ہے کہ گلی میں موجود افراد سے تحقیقات کی گئی ہیں لیکن فی الحال لڑکی کا کوئی سراغ نہ مل سکا ہے۔

وزیر اعلی سندھ کے نوٹس پر چائیلڈ پروٹیکشن ڈپارٹمنٹ کے مطابق واقعہ کی رپورٹ الفلاح تھانے میں درج کروادی گئی لیکن تین دن گزرنے کے بعد کوئی کارروائی نہ ہوئی۔

بچی کی والدہ کا کہنا ہے کہ کہ میرے بچے کبھی سودا سلف لینے بازار تک نہیں گئے اورگھر کے دروازے سے میری جوان سال لڑکی کا غائب ہونا شدید تکلیف کا باعث ہے۔ طویل گمشدگی مزید اذیت ناک ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گلی میں لگے سی سی ٹی وی کیمرے کی مدد سے واقعے کی تحقیقات کررہے ہیں۔ پولیس کے مطابق مغوی لڑکی کے والدین سے مزید گفتگو کی جارہی ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ شبہ ہے کہ لڑکی کو گلی سے بیہوش کرکے اغوا کیا گیا ہے، ذرائع کا بتانا ہے کہ اینٹی وائلنٹ کرائم سیل واقعے کی تحقیقات کررہا ہے۔

تین روز قبل بھی بچی کو بازیاب نہ کروایا جاسکا جس کے باعث گھر والوں نے بھی پولیس کی کارکردگی پر مایوسی کا اظہار کیا ہے۔

واضع رہے تین روز قبل دعا گھر سے کچرا پھینکنے نکلی تھی اس کے بعد سے لاپتا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More