بلوچستان میں جاری سیاسی ہلچل آخری مرحلے میں داخل

کوئٹہ: بلوچستان میں جاری سیاسی ہلچل آخری مرحلے میں داخل ہوگئی ۔

وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال سے ناراض اراکین اور اپوزیشن نے اکثریت ہونے کا دعویٰ کردیا ہے۔عدم اعتماد کی تحریک کی کامیابی کے لیے پینسٹھ کے ایوان میں سے تینتیس اراکین کی حمایت درکار ہوگی

ناراض اراکین اور اپوزیشن جماعتوں کے ممبرز کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بی اے پی کے قائم مقام صدر ظہور بلیدی کا کہنا تھا کہ ہم نے اکثریت ثابت کر دی اب بھی وقت ہے وزیراعلیٰ استعفی دے دیں۔

بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر ملک سکندر ایڈوکیٹ کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ کے پاس اب وزارت عظمی کا عہدہ رکھنے کا کوئی جواز نہیں رہا ۔بی این پی مینگل کے پارلیمانی لیڈر ملک نصیر شاہوانی اور بی این پی عوامی رکن اسد بلوچ نے وزیراعلیٰ سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا ۔

واضح رہے کہ تحریک کی کامیابی کے لیے65 کے ایوان میں سے 33اراکین کی حمایت درکار ہے ناراض اراکین نے 40 اراکین کی حمایت کا دعوی کیا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More