مسلح افواج اور قیادت کو تنقید کانشانہ بنانادرست نہیں، ترجمان پاک فوج

اسلام آباد: ڈی جی آئی ایس پی آر میجرجنرل بابرافتخار نے کہا ہے کہ مسلح افواج اور قیادت کو تنقید کانشانہ بنانادرست نہیں،جھوٹ کاسہارالےکراداروں کوتنقیدکانشانہ بنانےکاحق کسی کونہیں۔

میجرجنرل بابرافتخار کا کہنا تھا کہ آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ کا دورہ چین بہت اہم تھا۔ دورہ چین کے دوران متعددیادداشتوں پر دستخط ہوئے،اس دورے کے دور رس اثرات بہت جلد نظر آنا شروع ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے چین کے صدر سے بھی ملاقات کی۔

ان کا کہنا تھا کہ عسکری سفارتکاری نےپاک چین دوستی کو مزید مستحکم کیا، چین نے پاکستان کی دفاعی قوت بڑھانے میں اہم کردار ادا کیاہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ چین کےساتھ تعلقات خطےمیں امن کےلیےبہت اہم ہیں۔ پاکستان اورچین کےدرمیان اسٹریٹجک اور مضبوط دفاعی تعلقات ہیں،سی پیک پاک چین دوستی کا منہ بولتا ثبوت ہے،سی پیک کی سیکیورٹی پاک فوج کو دی گئی ہے،سی پیک کی سیکیورٹی پر 24گھنٹے کام کیا جارہاہے،ایپکس کمیٹی کی صدارت چین کے صدر کے پاس ہے۔

انہوں نے کہا کہ دفاع کے بجٹ پر ہمیشہ بحث شروع ہوجاتی ہے، یوٹیلٹی بلز، ڈیزل و پیٹرول پر کافی بچت کر رہے ہیں، بڑی فوجی مشقوں کو بھی چھوٹے پیمانے پر کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔

سابق صدر جنرل (ر) پرویزمشرف کی صحت کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ پرویزمشرف کی صحت بہت خراب ہے،اللہ تعالیٰ انہیں صحت دے،لیڈر شپ کا موقف ہے کہ انہیں واپس آجانا چاہیے، پرویزمشرف کی واپسی کا فیصلہ ان کی فیملی اورڈاکٹرزنے کرناہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More