حکومت 55 ارب ڈالر کا قرض واپس کرچکی ہے، فواد چوہدری

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا بلدیاتی انتخابات میں ہماری غلطیوں کی وجہ سے جے یو آئی جیت گئی۔فضل الرحمان کا اقتدار میں آنا بدقسمتی کی بات ہوگی۔ جے یو آئی اور ٹی ایل پی اوپر آئیں تو پاکستان نیچے جائے گا۔

کابینہ اجلاس کےبعد نیوز کانفرنس کرتے ہوئےوزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ پی ٹی آئی کی ری پلیسمنٹ اگر جے یو آئی ہے تو پھر سوچنے کی ضرورت ہے۔ پی ٹی آئی نہیں ہوگی تو کوئی قومی پارٹی نہیں ہوگی۔ ن لیگ اور پیپلزپارٹی کی کوئی حیثیت نہیں ہے۔ سیاسی بونے اپنا قد کاٹھ بڑھانے کیلئے بول رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہر حلقے کی اپنی مینجمنٹ کرنی پڑتی ہے۔ مینجمنٹ ایشو کی وجہ سے خیبر پختونخوا میں الیکشن ہارے ہیں۔ایک حلقے میں ایک ہی پارٹی کے چار، چار لوگ الیکشن لڑیں گے تو شکست ہی ہوگی۔ پی ٹی آئی کے کارکنوں کو چاہیے کہ اپنے آپ کو منظم کریں اور اپنے ذاتی مفادات کو پس پشت ڈال کر عمران خان کو مضبوط کریں۔ پی ٹی آئی تنہا قومی جماعت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ زرداری کی گفتگو سے مایوسی ہوئی۔ لگتا ہے زرداری کی ڈیل نہیں ہوئی ۔ ان کی امید ہوتی ہے تو یہ بوٹ پالش لےکر پہنچ جاتےہیں۔ امید پوری نہ ہوتو جلسوں میں الزامات لگاتےہیں۔ یہ لوگ اسی تنخواہ پر کام کریں گے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ پاکستان کےمعاشی اشاریے مثبت ہیں۔کسانوں کو بھی اضافی آمدنی ملی ہے۔کپاس کی فصل کی پیداوار میں19.5 فیصداضافہ متوقع ہے۔ تمام فصلوں کی ریکارڈ پیداوار ہوئی جبکہ کورونا کیخلاف جنگ میں پاکستان سب سے آگے ہے ۔انکم ٹیکس میں 31 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

فواد چوہدری نے کہاکہ ٹیکسٹائل سیکٹر کی گروتھ میں اضافہ ہورہا ہے۔ ن لیگ دورمیں بجلی کےمہنگے پلانٹس لگائےگئے اور اب یہ لوگ ہمیں معیشت ٹھیک کرنےکابھاشن دیتےہیں۔نوازشریف اورزرداری دور کےقرضوں کی قسطیں ادا کررہےہیں۔ نوازشریف اورزرداری دورکا 55 ارب ڈالر کا قرض واپس کرچکےہیں۔ آئی پی پیز کےمہنگےمعاہدےکرکے پاکستان کو نقصان پہنچایاگیا۔مہنگے معاہدوں کی وجہ سے بجلی کی قیمت میں اضافہ ہوا،34ارب روپے کی آئی پی پیز کو ادائیگی کی ہے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ گاڑیوں کی پیداوار 5 لاکھ تک لےجانا چاہتےہیں۔اس وقت پاکستان میں 2 لاکھ40 ہزار گاڑیاں بن رہی ہیں۔ گزشتہ 2 سال میں کارساز کمپنیاں 5 سے بڑھ کر 15 ہوگئی ہے۔اب 85 فیصد موٹرسائیکل پاکستان میں ہی تیار ہورہے ہیں، بجلی اورڈیزل کی کھپت میں اضافہ ہوا ہے، روزگارکےمواقع پیداہورہےہیں۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن ای وی ایم سےمتعلق ٹینڈر جاری کرے۔کابینہ اجلاس میں ای وی ایم سے متعلق بات کی گئی ہے۔ سینیٹ انتخابات میں شفافیت کیلئے الیکشن ایکٹ میں ترمیم کا مسودہ کابینہ سے منظورکرلیا گیا ہے۔ یہ ترمیم سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں کی گئی ہے ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More