عنایت حسین بھٹی کو مداحوں سے بچھڑے 23 برس بیت گئے

گلوکار، اداکار اور فلم ساز عنایت حسین بھٹی کو مداحوں سے بچھڑے تئیس برس بیت گئے، انہوں نے ڈھائی ہزار کے قریب گیت ریکارڈ کرائے، چار سو سے زائد فلموں میں بھی کام کیا۔

عنایت حسین نے 1950 کی دہائی میں فلم “شہری بابو” میں معاون کردار ادا کرکے اداکاری کا آغازکیا۔فلم”ہیر”میں رانجھے اور وارث شاہ میں وارث شاہ کا کردار ادا کیا، ان کے گائے ہوئے گیت چن میرے مکھناں اور دنیا مطلب دی او یار آج بھی مقبول ہیں، عنایت حسین بھٹی نے 500 فلموں میں 2 ہزار 500 کے قریب گانے ریکارڈ کرائے، 400 سے زیادہ فلموں میں کام کیا، جن میں 40 فلموں میں ہیرو کے روپ میں جلوہ گر ہوئے، انہوں نے 1967 میں اپنی ذاتی پروڈکشن کمپنی کے بینر تلے فلم “چن مکھناں” بنائی، جس نے کامیابی کے تمام ریکارڈ توڑ دیے،1965 کی پاک بھارت جنگ میں ریڈیو پاکستان لاہور سے عنایت حسین بھٹی کی منفرد اور گرج دار آواز میں ایک ترانہ بجتا تھا “اے مردِ مجاہد جاگ ذرا، اب وقت شہادت ہے آیا” اور اسی جنگی ترانے سے پاکستان میں قومی موسیقی کے باب کا آغاز ہوا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More