کراچی جلسے سے تحریک کا آغاز کر رہے ہیں، 10ستمبر تک حکومت مستعفی ہو جائے، فواد چوہدری

کراچی جلسے سے آغاز کررہے ہیں، دس ستمبر تک حکومت مستعفی نا ہوئی تو بات جلسوں سے آگے بڑھ جائے گی۔ فواد چوہدری بولے کہ پی ٹی آئی اب بھی نوے فیصد عوام پر حکومت کررہی ہے، امپورٹڈ حکومت اسلام آباد تک محدود ہے ، جب چاہیں انہیں بلاک کردیں پھر یہ صرف ہیلی کاپٹر سے ہی آجا سکیں گے۔ فوری الیکشن کا مطالبہ کرتے ہیں۔ حکومت آمادہ ہے تو ساتھ بیٹھ کر فریم ورک کرنے کو تیار ہیں۔

کراچی میں سابق گورنر سندھ عمران اسماعیل کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری نے کہا کہ کل خان صاحب کراچی جلسے سے تحریک کا آغاز کریں گے۔ دس ستمبر تک موجودہ حکومت مستعفی نا ہوئی تو بات جلسوں سے آگے بڑھ سکتی ہے، ہم فساد نہیں انتخابات چاہتے ہیں۔ حکومت الیکشن پر آمادہ ہو تو ساتھ بیٹھ کر فریم ورک کرنے کو تیار ہیں۔ امپورٹڈ حکومت اسلام آباد تک محدود ہے۔ جب چاہیں انہیں بلاک کردیں یہ پھر صرف ہیلی کاپٹر پر ہی آمد و رفت کرسکیں گے۔

رہنما پی ٹی آئی فواد چوہدری بولے کہ پاک فوج اور تحریک انصاف ملک کے لیے ضروری ہیں۔ دیگر جماعتوں کے قائدین نے شہباز گل سے بڑھ کر باتیں کی، شہباز گل بیمار نہیں، ان پر تشدد کیا گیا ہے۔ ان پر تشدد کی مذمت کرتے ہیں۔

فواد چوہدری نے مراد علی شاہ کو کراچی کے مسائل کے حل میں رکاوٹ اور متحدہ کو پیپلز پارٹی کی سبسڈری قرار دیتے ہوئے کہا کہ لگتا ہے یہ ضم ہونے جارہے ہیں۔ فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ واپسی کی صورت میں نواز نے جیل ہی جانا ہے۔ عدالتی پروسس سے گزر کر باہر آسکیں تو آجائیں۔ ڈیل کے ذریعہ باہر آنے نہیں دیں گے۔

پریس کانفرنس سے خطاب میں سابق گورنر سندھ عمران اسماعیل کا کہنا تھا کہ امپورٹڈ حکومت ساری طاقت عمران اور اس کی جماعت کو ختم کرنے میں لگا رہی ہے۔ ظلم اتنا کریں جتنا خود برداشت کرسکیں۔ انہوں نے حلیم عادل شیخ اور شہباز گل کی گرفتاری کی شدید مذمت کی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More