ڈاکٹر عافیہ کی فیملی کو امریکی ویزےکیلئے اقدامات کی ہدایت

اسلام آباد ہائیکورٹ نے امریکی جیل میں قید پاکستانی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی سے متعلق کیس میں وزارت خارجہ کو ڈاکٹر عافیہ کی فیملی کو امریکی ویزا کی فراہمی کیلئے اقدامات کی ہدایت کردی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس سردار اعجاز خان امریکی جیل میں قید پاکستانی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی سے متعلق کیس میں وزارت خارجہ کو ڈاکٹر عافیہ کی فیملی کو ملاقات کرانے سے متعلق کیس پر سماعت کی۔

سماعت کے دوران درخواست گزار ڈاکٹر فوزیہ صدیقی اپنے وکیل ڈاکٹر ساجد قریشی کے ساتھ عدالت پیش ہوئے جبکہ وزارت خارجہ کی جانب سے ڈائریکٹر یو ایس اے راجیل محسن عدالت میں پیش ہوئے اور وزارت خارجہ کی جانب سے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کے حوالے سے رپورٹ عدالت میں جمع کرائی ۔

جسٹس سرداراعجاز اسحاق خان نے کہاکہ میں سمجھنا چاہ رہا ہوں کہ کونسل جنرل حقائق کے خلاف بات کیوں کریں گے ؟نمائندہ وزارت خارجہ نے کہاکہ وزارت خارجہ کوشش کرے گی کہ ان کو ویزا فراہم کیاجائے یہ وہاں خود جائیں اور ان سے رابطہ کریں، عدالت نے کہاکہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی سے جیل حکام ملاقات نہیں کرا رہے تو اس عدالت کو کیا حکم دینا چاہیے،کیا آپ خود امریکہ جاکر ان کو دیکھنا چاہیں گے ؟جس پرڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے کہاکہ میں جانا چاہتی ہوں مگر سفارتخانہ کو میری حفاظت کو یقینی بنانا ہوگا،ایسا نہ ہو کہ میں وہاں چلی جاؤں اور مجھے بھی گرفتار کرکے جیل میں ڈال دیں،نمائندہ وزارت خارجہ نے کہاکہ ان کے بھائی جو کہ امریکہ میں ہیں ان سے ملاقات کی کوشش کرتے ہیں کیس کی سماعت5 اگست تک کے لئے ملتوی کردی۔

سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے وزارت خارجہ کے حکام کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ انکا رویہ اور بیانات لمحہ فکریہ ہیں۔ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی بہن بولیں جب بھارتی جاسوس کی ملاقات ہوسکتی ہے تو ہماری ملاقات میں کیا رکاوٹ ؟

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More