چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کو کالعدم قرار دینے کی انٹرا کورٹ اپیل مسترد

اسلام آباد ہائیکورٹ نے چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کو کالعدم قرار دینے کی یوسف رضا گیلانی کی انٹراکورٹ اپیل مسترد کردی ۔

جسٹس عامر فاروق اور جسٹس طارق محمود جہانگیری پر مشتمل اسلام آباد ہائیکورٹ کے دو رکنی بینچ نے سینیٹ انتخابات میں صادق سنجرانی کی بطور چیئرمین انتخاب کے خلاف سینیٹر یوسف رضا گیلانی کی انٹراکورٹ اپیل پر محفوظ شدہ فیصلہ سنادیا۔ عدالت نے گزشتہ سنگل بینچ کا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے یوسف رضا گیلانی کی جانب سے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو کامیاب قرار دینے کے خلاف انٹراکورٹ اپیل بھی مسترد کرنے کا حکم سنایا۔

یوسف رضا گیلانی نے موقف اختیار کر رکھا تھا کہ پریذائیڈنگ آفیسر نے سات ووٹ غلط طور پر مسترد کیئے ۔ سینیٹ الیکشن صدر پاکستان کے نامزد پریزائیڈنگ آفیسر نے کرائے، پریزائیڈنگ آفیسر کا فیصلہ ایوان کی اندرونی کارروئی نہیں کہلاتا۔ عدالت پریزائیڈنگ آفیسر کے فیصلے پر نظر ثانی کر سکتی ہے۔

چیف جسٹس اطہرمن اللہ پر مشتمل اسلام آباد ہائیکورٹ کے سنگل بینچ نے یوسف رضا گیلانی کی درخواست ناقابل سماعت قرار دیدی تھی جس کے خلاف یوسف رضا گیلانی نے انٹراکورٹ اپیل دائر کی تھی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More