سندھ ہاؤس میں کارروائی ہوئی تو ردعمل شدید ہوگا، سعید غنی

اسلام آباد پیپلز پارٹی کے رہنما اور وزیراطلاعات سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ حکومت نے سندھ ہاؤس پرکارروائی کی تو ردعمل شدید ہوگا۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراطلاعات سندھ سعید غنی نے کہا کہ سندھ ہاؤس میں ڈاکو یا قاتل ہیں جو پولیس کو مطلوب ہیں۔ یہ چوروں کےسردار ہیں۔ انہیں نہ آئین کا معلوم ہے نہ ہی قانون کے بارے میں ادراک ہے۔

انہوں نے کہا کہ تاثر دیا گیا کہ سندھ ہاؤس میں اراکین اسمبلی کو جبری رکھا گیا ہے لیکن وہ واضح ہونا چاہیے کہ وہ سب اپنی مرضی سے موجود ہیں۔

سعید غنی نے کہا کہ کسی ایم این اے کے ساتھ زبردستی کی تو ہم نے شرافت کا لبادہ نہیں اوڑھاہوا۔ صرف پی ٹی آئی نہیں ن لیگ اور پیپلز پارٹی کے ایم این ایز بھی سندھ ہاؤس میں ہیں۔

سعید غنی نے وزیر اعظم پر الزام لگایا کہ شرم کی بات ہے کہ عمران خان پی ٹی آئی کے منحرف اور اپوزیشن اراکین اسمبلی کی جاسوسی کروارہے ہیں۔ ارکان کی فون ٹیپ کروانا اور جاسوسی آئین کی خلاف ورزی ہے۔ وزیر اعظم عمران خان اور ان کے وزرا دھمکیاں دے رہے ہیں۔ اگر حکومت نے سندھ ہاؤس پر کارروائی کی تو ردعمل شدید ہوگا۔

صوبائی وزیر اطلاعات نے کہا کہ عمران خان سابق وزیراعظم کہلانے والے ہیں اور نئی سیاسی پیشرفت کے بعد عمران خان اب کہیں گے مجھے کیوں نکالا۔ کوئی ایم این اے کسی پارٹی میں شامل نہیں ہوا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More