میرے خلاف غلیظ زبان کے استعمال پر قانونی کارروائی میرا حق ہے، مراد سعید

اسلام آباد: وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید کا کہنا ہے کہ میرے خلاف غلیظ زبان کے استعمال پر قانونی کارروائی میرا حق ہے۔متعلقہ ادارے نےمیری درخواست پر کیسے کارروائی اس کا میں جوابدہ نہیں۔

وفاقی وزیر مرادسعید نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ ظلم اور ناانصافی کے خلاف تحریکوں میں مسلسل حصہ لیا۔ ڈنڈے کھائے اور جیلوں میں گیا۔ پارلیمنٹ میں ان کی جی حضوری نہیں بلکہ عوام کی آوازبننے آیا تھا۔ یہ لوگ پارلیمنٹ کو اپنی جاگیر، سیاست کو اپنا کاروبارسمجھتے ہیں۔ میں نے طویل سیاسی جدوجہد کے بعد مقام حاصل کیا۔ ڈگری کے مسئلے پرعدالت سے سرخروہوا۔

اپنے متعلق غلیظ زبان استعمال کیے جانے پر ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ کے رہنما میاں جاوید لطیف، رانا ثناء اللہ، پیپلز پارٹی کے عبد القادر پٹیل، آغا رفیع اللہ، جے یو آئی کے حافظ حمد اللہ غلیظ زبان استعمال کرتے ہیں۔ میرے خلاف غلیظ زبان استعمال کی گئی۔ میرے خلاف غلیظ زبان چلانے والوں کی یہ اوقات ہے کہ یہ کسی غریب کو آگے آنے کا موقع نہیں دیتے۔ یہ لوگ میرے جیسا نوجوان سیاست میں برداشت نہیں کرسکتے۔ کرپشن بے نقاب کرنے پرمیرے خلاف غلیظ زبان استعمال کی گئی۔

وفاقی وزیر مواصلات کا کہنا تھا کہ ایک قانونی اور دوسرا غیرقانونی راستہ ہوتا ہے۔ میں نے قانون کے مطابق کارروائی کرنے کا راستہ اختیار کیا۔ میری 8 سال کی تقریریں سن لیں کبھی غلیظ زبان استعمال نہیں کی۔ پاکستانیوں یہ ہرنوجوان کے لیے وارننگ ہے، ان کی مہم کے باوجود میں نے ڈیلیور کیا، نئے عزم کے ساتھ پارلیمنٹ میں یہ مجھے دیکھیں گے۔ بحیثیت پاکستانی اپنا قانونی حق استعمال کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ 13 سال بعد پاکستان پوسٹ کوخسارے سے نکالا۔ ہم نے اپنے ادارے میں کرپشن کے دروازے بند کردیئے۔ عالمی ادارے آئی ایس او نے بھی میری وزارت کی کارکردگی کو مانا، این ایچ اے کی آمدن میں 107 ارب کا اضافہ ہوا، دو موٹروے پر ٹیکس 2015ء میں نوازشریف کے معاہدے کی وجہ سے بڑھایا۔ مسلم لیگ(ن)کے دورسے سستی سڑکیں بنائیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More