شوہر پر پارٹی سے غداری کا الزام، عظمیٰ بخاری کا رد عمل

لاہور: مسلم لیگ نون کی ایم پی اے عظمیٰ بخاری اپنے شوہر پر پارٹی سے غداری کے الزمات پر ان کے دفاع میں سامنے آ گئیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر عظمیٰ بخاری اور ان کے شوہر سمیع اللہ خان کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ ایک ٹوئٹر صارف کی جانب سے الزام عائد کیا گیا کہ غدار ایم پی اے سمیع اللہ خان پنجاب اسمبلی سے غائب ہوگئے تھے، یہ عظمیٰ بخاری کے شوہر ہیں اور پارٹی کی طرف سے اپنی بیگم کو نظرانداز کرنے پر ناراض تھے۔

سوشل میڈیا پر تنقید پر عظمیٰ بخاری نے ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ بہت افسوس ہے، یہی سننا باقی رہ گیا تھا حکومت میں آنے کے بعد۔

عظمیٰ بخاری نے کہا ہے کہ پارٹی نے جب ہاؤس میں جانے کو کہا ہم گئے، یہ کیوں ہوا میں نے بھی یہ سوال آج پارٹی سے پوچھے، لگتا ہے ساڑھے نو سال ضائع ہی کر دئیے، جو یہ فیصلے کر رہے تھے ان سے پوچھیں، دل ٹوٹ گیا آج، پرویز الہی کے 4 سال انہی دو غداروں نے بھگتے۔

واضح رہے کہ پنجاب اسمبلی کا اجلاس صرف 9 منٹ چل سکا، محرک کی عدم موجودگی پر اسپیکرکے خلاف تحریک عدم اعتماد نمٹا دی گئی۔

ذرائع کے مطابق پینل آف چئیرمین نے محرک سمیع اللہ خان کا نام بار بار پکارا، تحریک عدم اعتماد کے محرک سمیع اللہ اسمبلی میں موجود نہ تھے جس پر عدم اعتماد کی تحریک ختم کر دی گئی۔

جبکہ نون لیگ کے ممبر پنجاب اسمبلی سمیع اللہ خان نے کہا ہے ہمارے ایوان میں آنے سے پہلے اجلاس کی کاروائی ختم ہو گئی تھی، ہمیں اسمبلی کے اندر نہیں آنے دیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ اس طرح کبھی نہیں ہوا کہ ایوان میں دوسری جماعت کے آنے سی قبل ہی کاروائی مکمل کرلی جائے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More