رب راضی ہاؤ سنگ سوسائٹی کے مالکان کی درخواست ضمانت مسترد، ملزمان گرفتار

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے رب راضی کوآپریٹو ہاوسنگ سوسائٹی کے ملزمان کی ضمانت قبل از گرفتاری مسترد کر دی۔ نیب نے ملزم شاہ محمد، عرفان رسول اور سرتاج الحق کو احاطہ عدالت کے باہر سے گرفتار کر لیا۔

سپریم کورٹ میں رب راضی کوآپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹی کے ملزمان کی ضمانت قبل از گرفتاری سے متعلق کیس کی سماعت جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ ملزمان پر 39 کروڑ 30 لاکھ روپے کے فراڈ الزام ہے۔ملزمان نے نو ایکڑ سے زائد سرکاری زمین پر قبضہ کر کے لوگوں کو بیچ دی۔

عدالت نے اسسٹنٹ رجسٹرار کوآپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹی سرتاج الحق کے وکیل کی غلط بیانی پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا عدالت سے غلط بیانی آپ کو مہنگی پڑھ سکتی ہے۔آپ کے موکل نے بطور انکوائری افسر تمام ملزمان کو رپورٹ میں تحفظ دیا۔ آپ بھی ان کے جرم میں برابر کے شریک ہیں ۔جائیں نیب میں اپنے مقدمات کا سامنا کریں۔

نیب وکیل نے کہا کہ کوآپریٹو ہاوسنگ سوسائٹی کے ممبران نے پرائیویٹ ممبران کے ساتھ مل کر جعلی لیز کے لیٹر نکالے اور سرکاری اراضی پر قبضہ کرنے کے ساتھ لوگوں کے ساتھ فراڈ کیا۔ عدالت نے ملزمان کی درخواست ضمانت قبل از گرفتاری مسترد کرتے ہوئے ملزمان کو نیب مقدمات کا سامنا کرنے کاحکم دے دیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More