ملک کے مختلف شہروں میں شدید بارش نےتباہی مچادی

سندھ کے مختلف شہروں میں شدید بارش نےتباہی مچا دی۔ تونسہ شریف میں سڑکوں پر کشتیاں چل پڑیں۔ قصور میں دو مختلف حادثات میں دو افراد جان سے گئے۔ بلوچستان کے ضلع کوہلو میں حالیہ بارشوں اور سیلاب سے ایک سو پچاس سے زائد مکان تباہ ہوگئے۔

حیدرآباد، ٹھٹھہ، سجاول اور بدین سمیت سندھ کے بیشتر علاقوں میں شدید بارش کے باعث شاہراہیں اور نشیبی علاقے ڈوب گئے۔ حیدرآباد میں شہر کی سڑکوں پر گاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں جبکہ ٹھٹھہ میں شاہی بازار، شیخ فرید چوک، چاندنی چوک سمیت دیگر علاقوں میں تین سے چار فٹ تک پانی جمع ہوگیا ادھر سکھر میں اہم کاروباری مراکز کی طرف آنے والے راستوں پر پانی جمع ہوگیا۔

عمر کوٹ میں شدید بارش شہر کے کئی علاقوں میں گھٹنے گتک پانی جمع ہوگیا ادھر تھر پارکر میں مٹی کا طوفان آگیا۔

تونسہ شریف میں شدید بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔ مین وہوا روڈ پر بارش کے پانی کی نکاسی نہ ہونے کے باعث کشتیاں چل پڑیں۔

قصور کے علاقے چونیاں میں بارش کے پانی میں تین سالہ بچہ ابوبکر ڈوب کر جاں بحق ہوگیا جبکہ سریسر ہٹھاڑ گاؤں میں بارش کے باعث زیر تعمیر مکان کی چھت گرنے سے سات بچوں کی ماں سعدیہ بی بی جاں بحق ہوگئی اور ان کے پانچ بچے زخمی ہوگئے۔ ادھر گوجرانوالہ میں نالہ ڈیک کے سیلابی ریلے کا پانی واہنڈو کے قریب لدھڑ گاؤں میں داخل ہوگیا۔

بلوچستان کے ضلع کوہلو میں حالیہ بارشوں اور سیلاب سے ایک سو پچاس سے زائد مکان مکمل طورپر گرگئے۔ شہید جہانگیر آباد میں بھی سیلابی ریلے اور طوفانی بارشوں سے درجنوں مکانات مہندم ہوگئے۔ بولان میں بولان ندی میں سیلابی صورت حال ہے ادھر حب ڈیم بھرنے سے ڈیم کے اسپل وے سے پانی نکلنے سے حب ندی میں سیلابی صورت حال ہے۔

ناران میں بھی سیلابی ریلے نے تباہی مچا دی۔ سیلابی ریلا کئی ہوٹل بہاکر لے گیا۔ سیاحت کے لئے آئے لوگوں میں افراتفری پھیل گئی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More