صارفین کو گیس دینا شروع کردیں تو گیس کمپنیاں دیوالیہ ہو جائیں گی، حماد اظہر

اسلام آباد: حماد اظہر نے کہا ہے کہ اگر درآمدی گیس صارفین کو دینا شروع کردیں تو گیس کمپنیاں دیوالیہ ہو جائیں گی۔ گیس کی مسئلے پر قانون سازی کرنے جارہے ہیں۔

اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کے دورمیں ایل این جی خریدنے یا نہ خریدنے کا ایک بیانیہ بن گیا ہے، ریسرچ کی تو پتا چلا کہ سردیوں میں گیس کی قلت کا ایل این جی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں گیس کے مسئلے کو صحیح طریقے سے بیان نہیں کیا گیا ۔ ہمارے ہاں ہر سال گیس کی نو فیصد کمی ہورہی ہے۔ لوکل گیس کا فلو 800 ایم ایم سی ایف ڈی رہ گیا ہے۔ گیس کی مسئلے پر قانون سازی کرنے جارہے ہیں ،مقامی اور درآمدی گیس کی اوسط قیمت کے لئے قانون سازی کرنے جارہے ہیں۔

حماد اظہر نے کہا کہ منفرد طرز کے ورچوئل ایل این جی ٹرمینلز لگانے جارہے ہیں ۔ یہ ٹرمینلز ہماری گیس پائپ لائنز کے ذریعے اپنے صارفین کو گیس فراہم کرسکیں گے ۔ 1950 کے بعد سے گیس کا بہت بڑا ذ خیرہ دریافت نہیں ہوا۔ حکومت ٹائٹ گیس پالیسی لارہی ہے،بعض عالمی کمپنیاں ٹائٹ گیس میں سرمایہ کاری کرنا چاہتی ہیں۔

حماد اظہر کا مزید کہنا تھا کہ دور دراز علاقوں میں ہمیں سمارٹ گرڈز پر جانا ہے۔ کہا جاتا ہے کہ حکومت کے ایل این جی نہ خریدنے سے گیس کی قلت پیدا ہوتی ہے،گیس کی قلت کا ایل این جی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More