تازہ ترین
ترک صدر طیب اردوان کا22جولائی کو آیا صوفیہ مسجد کوکھولنے کا اعلان

ترک صدر طیب اردوان کا22جولائی کو آیا صوفیہ مسجد کوکھولنے کا اعلان

انقرہ: (11 جولائی 2020) ترکی کے صدر رجب طیب اردوان نے بائیس جولائی کو آیا صوفیہ مسجد کوکھولنے کا اعلان کیا ہے اور اپیل کی ہے کہ ہر مکتبہ فکر کے افراد کو اعلیٰ عدالت کے فیصلے کو تسلیم کرنا چاہیئے۔ تاریخی مسجد مسلمانوں اور غیرمسلمانوں کے لئے کھلی رہے گی۔

ترکی کے شہر استنبول کی تاریخی عمارت آیا صوفیہ دوبارہ مسجد بن گئی۔ ٹی وی پر قوم سے خطاب میں ترکی کے صدر رجب طیب اردوان نے اعلان کیا۔ آیا صوفیہ کو مسجد بنانے کیلئے کام کیا جائے گا۔ اور یہ کام بائیس جولائی کو مکمل ہوگا۔لیکن مسجد کو عبادت کے لئے چوبیس جولائی کو کھولا جائے گا۔ ترک صدر نے کہاکہ مسلمان اور غیر مسلم اس تاریخی مسجد کا دورہ کرسکتے ہیں اور ان سے ٹکٹ کا کوئی پیسہ نہیں لیا جائے گا۔

انہوں نے کہاکہ آیا صوفیہ ترک قوم کا وقار اورتاریخی ورثے کی نشانی ہے۔ میوزیم کو دوبارہ مسجد میں تبدیل کرنا کاعدالتی فیصلہ ترک قوم کے اقدار پر حملہ کرنے والوں کو اچھا جواب ہے۔

اس سے پہلے ترکی کی عدالت نےاستنبول میں چھٹی صدی میں بننے والی قدیم عمارت کو مسجد میں تبدیل کرنے فیصلہ سنایا۔مسجد کے باہر جمع سیکڑوں لوگ خوشی سے جوم اٹھے اور آذان دی گئی۔ آیا صوفیہ یونانی لفظ ہے جس کا مطلب مطلب فہم ہے۔یہ عمارت چھٹی صدی میں بازنطینی بادشاہ جسٹنیئن اول کے دور میں بنائی گئی تھی اور تقریباً ایک ہزار سال تک یہ دنیا کا سب سے بڑا گرجا گھر تھی۔

سلطنتِ عثمانیہ کے سلطان محمدفاتح نے 1453 میں استنبول کو فتح کیا تو اس عمارت کومسجد میں تبدیل کردیا۔ 1930 کی دہائی میں اس وقت کے ترک سربراہ کمال اتا ترک نےاسے میوزیم میں تبدیل کردیا۔بعد میں اقوام متحدہ نے اس عمارت کو عالمی ورثہ کی فہرست میں بھی شامل کرلیاتھا۔ گزشتہ سال اپنی انتخابی مہم کے دوران ترک صدر طیب اردوان نے اس میوزیم کو مسجد میں تبدیل کرنے کا وعدہ کیا تھا۔

Comments are closed.

Scroll To Top