فرانس، 132 ٹن وزنی پتھر جسے کوئی بھی اکیلا ہلا سکتا ہے

پیرس: شمالی مشرقی فرانس میں ایک ایسا 132 ٹن وزنی پتھر ہے جسے کوئی بھی اکیلا شخص ہلا سکتا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق فرانس میں ایک جنگل ایسا بھی ہے جو رنگ برنگی چٹانوں سے بھرا پڑا ہے اور جہاں لاتعداد ارضیاتی عجوبے پائے جاتے ہیں۔

اسی جنگل میں ایک پتھر ایسا بھی ہے جو 132 ٹن وزنی ہے تاہم اسے اکیلا شخص بھی ہلا سکتا ہے لیکن اس کے لیے شرط یہ ہے کہ اسے پتھر کو ہلانے کے لیے درست مقام کا پتہ ہو۔

ویل گوت نامی جنگل میں پڑا یہ پتھر بہت مشہور ہے اور بظاہر وہ اتنا بڑا ہے کہ اسے دیکھ کرگمان ہوتا ہے کہ یہ ناقابلِ جنبش ہے اور دیکھنے والا یہی سوچتا ہے کہ کوئی بھی اسے نہیں ہلا سکتا ہے لیکن یہ چٹان نما پتھر بہت آسانی سے ہلایا جاسکتا ہے۔

پتھر کو ہلانے کے لیے شرط ہے کہ آپ کو اس کے ہلانے کے درست مقام کا معلوم ہو کیونکہ وہ پتھر کے مرکزِ ثقل پر اثرانداز ہوتی ہے۔

یہ پتھر نیچے سے تنگ ہے اور اوپر سے قدرے وسیع ہے۔ اس پتھر کو لوگان کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ جو لوگ بھی اس پتھر کو ہلاتے ہیں وہ خود کو بہت طاقتور تصور کرتے ہیں لیکن ایسا نہیں ہے۔

اگرچہ اس پتھر کی اونچائی انسان سے بھی بلند ہے اور اگر اس پتھر کے نچلے حصے پر دونوں ہاتھوں سے اسے اٹھائیں تو یہ واضح طور پر ہلتا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More