ٹی ٹی پی سے صرف سیز فائر پر بات ہو رہی ہے، فواد چوہدری

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کالعدم تحریک طالبان پاکستان سے مذاکرات کے حوالے سے کہا ہے کہ اس وقت صرف سیز فائر پر بات ہو رہی ہے۔ ٹی ٹی پی سے مذاکرات میں مقامی لوگوں کوبھی شامل کیا ہے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ یہ نہیں ہوسکتا کہ ریاست مسلسل حالت جنگ میں رہے، پاک فوج نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں دی ہیں۔ اس وقت صرف سیز فائر پر بات ہو رہی ہے۔ ٹی ٹی پی سے مذاکرات میں مقامی لوگوں کوبھی شامل کیا ہے۔ ہم اس پورے خطے میں امن چاہتے ہیں۔ یہ مقامی لوگ ہیں اس لیے ریاست ان کوموقع دے رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئین کے تحت کالعدم تحری طالبان پاکستان سے مذاکرات ہورہےہیں، کالعدم ٹی ٹی پی ایک گروپ نہیں اس میں بھی کئی گروپس ہیں، نئی افغان حکومت بھی پاکستان میں امن چاہتی ہے، بحیثیت مسلمان اوربحیثیت پڑوسی ہمیں افغانستان کی صورتحال پرتشویش ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ افغان عوام کی مدد کیلئے خصوصی فنڈ قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے، 2کروڑ30لاکھ افغان غذائی قلت کاشکارہیں، افغان وزیر خارجہ امیر محمد خان متقی جمعرات کو پاکستان آئیں گے، ان کے دورے پر معاملات طے کیے جائیں گے۔ افغان عوام کیلئےجوکچھ ہوسکاوہ کرینگے۔ پاکستان کےعوام بھی افغانستان کےعوام کی مدد کر سکیں گے۔ موجودہ صورتحال سے افغانستان میں بچے زیادہ متاثر ہو رہے ہیں۔ چاول اورگندم افغانستان کیلئےبھجوارہےہیں۔ مسلم امہ سےاپیل ہےکہ وہ افغان عوام کی مدد کیلئے آگے آئے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ہرچیزپرسبسڈی دینگےتوملک نہیں چل سکتا، مارچ کے بعد گیس بحران کم ہو جائےگا۔ افغانستان کیلئےچاول اورگندم بھجوارہےہیں، کابینہ نےبرآمدی صنعت کیلئےگیس سستی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سیاحت کےفروغ کیلئےحکومت خصوصی اقدامات کررہی ہے۔ کہاگیاچینی 160 روپے سے اوپر چلی گئی لیکن آن لائن ایپ پر آپ 100روپے میں منگوا سکتے ہیں۔ گیس پرسبسڈی دی گئی جس کاغلط استعمال کیاگیا۔

سیاسی معاملات پر بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھاکہ اپوزیشن والے پہلے بھی احتجاج کے سلسلے میں سڑکوں پر آئے تھے اب پھر شوق پورا کرلیں۔ مولانا فضل الرحمان سردیوں میں ایکٹو ہوتےہیں۔ شہبازشریف کو نواز شریف کو واپس لانا چاہیے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More