رمضان ریلیف پیکج اور اوور سیز پاکستانیوں کو قرضوں کی منظوری

اسلام آباد: کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی نے رمضان المبارک میں یوٹیلٹی سٹورز پر ریلیف پیکج کے تحت آٹھ ارب اٹھائیس کروڑ روپے مختص کرنے کی منظوری دیدی۔ یوٹیلیٹی سٹورز پر 19 اشیائے ضروریہ پرسبسڈی دی جائے گی۔ سمندر پار پاکستانیوں کو بھی قرضے فراہم کرنے کی اسکیم کی منظوری۔

وزیر خزانہ شوکت ترین کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا۔ کمیٹی نے 8.28 ارب روپے کے رمضان ریلیف پیکیج کی منظوری دیدی۔ یوٹیلیٹی سٹورز پر 19 اشیائے ضروریہ پرسبسڈی دی جائے گی۔ اوورسیز پاکستانیوں کیلئے کامیاب اوورسیز پروگرام کی منظوری دی گئی۔ کم آمدن وقلے تارکین وطن کیلئے سود سے پاک قرضے فراہم کئے جائیں گے۔پروگرام کے تحت 10 ہزار 180 افراد کو 3 لاکھ تک قرض فراہم کیا جائے گا۔

ای سی سی نے وزیراعظم کے اعلان کے مطابق بجلی نرخوں میں 5 روپے فی یونٹ ریلیف کی منظوری دیدی۔ یہ ریلیف مارچ سے جون 2022ء تک چار ماہ کیلئے دیا جائے گا۔ وزیراعظم ریلیف پیکیج کے تحت 136 ارب روپے کی سہولت فراہم کی جائے گی۔

کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی نے امپورٹ سینڈ ایکسپورٹ پالیسی آرڈر 2020ء میں ترامیم کی منظوری دیدی۔ ای سی سی کی توغ گیس فیلڈ سے ایس این جی پی ایل کو 16 ایم ایم بی ٹی یو گیس فراہمی کی منظوری دیدی گئی۔

وزیر اعظم کے پیٹرولیم ریلیف کے تحت آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کو قیمتوں کا فرق حکومت ادا کرے گی۔ او آئی سی کے وزراء خارجہ اجلاس کیلئے 42.89 کروڑ کے فنڈز کی فراہمی کی منظوری جبکہ تخفیف غربت و سماجی بہبود ڈویژن کیلئے 4.75 کروڑ کی گرانٹ کی منظوری دیدی گئی۔ نیا پاکستان سرٹیفیکیٹس پر اصل اور سود کی ادائیگی کیلئے 135 ارب کی سپلیمنٹری گرانٹ کی منظوری دی گئی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More