ای سی سی کی افغانستان کو غذائی مصنوعات برآمد کی اجازت

اسلام آباد: کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی نے افغانستان میں غذائی بحران کو مدنظر رکھتے ہوئے پاکستانی روپوں میں مخصوص مصنوعات کی برآمد کی اجازت دیدی۔افغانستان سے چلغوزے کی درآمد پر عائد45 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی ختم کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا ۔

وزیرخزانہ شوکت ترین نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس کی ورچوئل صدارت کی۔ اجلاس میں وفاقی وزراء، مشیروں، معاونین اور دیگر اعلی حکام نے شرکت کی۔ای سی سی نے داسو ہائیڈرو منصوبے پر ہلاک ہونے والے چینی شہریوں کی فیملیز کیلئے معاوضے کی منظوری دے دی۔ لواحقین کو سرکاری طور پر ایک کروڑ 16 لاکھ ڈالر بطور خیر سگالی معاوضہ ادا کیا جائیگا۔

اجلاس میں ربیع سیزن کیلئے یوریا کی ضروریات کا بھی جائزہ لیا گیا۔ ای سی سی نے ایس این جی پی ایل سے وابستہ فاطمہ فرٹیلائزر اور ایگری ٹیک کو مارچ تک گیس کی فراہمی کی منظوری بھی دی۔اس عرصے کے دوران پلانٹس کو 839 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو پر گیس ملے گی۔

اجلاس میں 5 جی اسپیکٹرم کیلئے مشاورتی کمیٹی قائم کرنے اور ای سی سی نے پاکستان موبائل کمیونیکیشن لمیٹڈ کے سیلولر لائسنس کی رینیوئل کی بھی منظوری دیدی گئی۔ ای سی سی نے نئی مردم و خانہ شماری کیلئے 5 ارب روپے کی گرانٹ،ایف بی آر کیلئے 4 ارب روپے کے فنڈز کی منظوری دی ۔

اجلاس میں اسلام آباد انتظامیہ کے منصوبوں کیلئے 7.85 کروڑروپے، ایف سی بلوچستان کے ہیلی کاپٹر کی مرمت کیلئے 6 کروڑ اور ایف سی ہیڈکوارٹرز نارتھ کے ہیلی کاپٹر کے پرزہ جات کیلئے 30 لاکھ روپے کی منظوری دے دی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More