اقتصادی رابطہ کمیٹی نے 5 لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے کی منظوری دے دی

اسلام آباد: کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی نے پانچ لاکھ ٹن گندم کی درآمد کی بولی کی منظوری دے دی ، وفاقی وزیر خزانہ کی زیر صدارت ففتھ جنریشن لائسنس جاری کرنے کیلئے کمیٹی قائم کر دی گئی ۔

وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا، اجلاس میں وفاقی وزراء، وزراء مملکت، سیکرٹریز اور دیگر اعلی حکام کی شرکت کی۔

ای سی سی نے پانچ لاکھ میٹرک ٹن گندم کیلئے بولی کی منظوری دیدی گندم کی درآمد کیلئے کارگل انٹرنیشنل نے 439 ڈالر فی ٹن کی کم بولی دی تھی۔

کمیٹی نے ورلڈ فوڈ پروگرام کے تحت افغانستان کیلئے 1 لاکھ 20 ہزار ٹن گندم درآمد کی منظوری دے دی، افغانستان کیلئے منگوائی جانے والی گندم کےتمام اخراجات ڈالر میں وصول کئے جائیں گے۔

ای سی سی نے مویشیوں میں پائی جانے والی لمپی اسکن بیماری کو نیشنل ڈیزیز ایمرجنسی قرار دینے کیلئے متعلقہ محکموں سے مشاورت کی ہدایت کر دی ۔

ای سی سی نے ٹمبر کے درآمد کنندگان کیلئے 31 اگست تک درامدی پابندی نرم کردی۔ افغانستان سے پاکستانی کرنسی میں درآمد کیلئے امپورٹ پالیسی کی منظوری دے دی گئی۔

وزیراعظم سستا آٹا پروگرام کی کے پی تک توسیع اور یوٹیلٹی اسٹورز نیٹ ورک کی وسعت کیلئے اقدامات کی ہدایت کی گئی۔ ریلیف پیکیج کے تحت پانچ اشیاء کی فراہمی جاری رکھنے کیلئے مالیاتی پہلو پر غور کی بھی ہدایت کی گئی۔ بیرونی قرض کی ادائیگی کیلئے 1 ارب 93 کروڑ کی گرانٹ منظوری بھی دے دی گئی۔

ای سی سی نے نیکسٹ جنریشن موبائل سپیکٹرم کی رپورٹ کے جائزے کیلئے وزیر خزانہ کی زیرصدارت کمیٹی قائم کردی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More