عمران کے دور حکومت میں کرپشن کے نت نئے طریقے دریافت کیے گئے، رانا ثناء اللہ

اسلام آبادز: وزیرداخلہ رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ عمران خان دور حکومت میں کرپشن کے نت نئے طریقے دریافت کیے گئے۔ سابق وزیراعظم عمران خان اور اہلیہ کے نام پرقائم ٹرسٹ کو نجی سوسائٹی کی جانب سے 458 کنال زمین عطیہ کی گئی، تحقیقات کیلئے کمیٹی تشکیل دیدی۔

وفاقی کابینہ کے ممبران وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب، وفاقی وزیر مصدق ملک، مشیر برائے وزیراعظم قمر الزمان کائرہ، وفاقی وزیر مواصلات اسعد محمود کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر داخلہ رانا ثناءاللہ نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی سابق حکومت میں کرپشن کے نت نئے طریقے دریافت کئے گئے، نجی ہاؤسنگ سوسائٹی نے ایک ٹرسٹ کو 458 کنال زمین عطیہ کی، ٹرسٹ عمران خان اوران کی اہلیہ کےنام پرہے، چیئرمین پی ٹی آئی کو جعلی صادق اور امین کا لقب دیا گیا، اس سارے معاملے کی تحقیقات کیلئے سب کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔

وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ مسٹر کلین اور صادق و امین نے برطانیہ میں ریکور ہونے والے 50ارب روپے قومی خزانے میں جمع کرانے کی بجائے نجی ہاؤسنگ سوسائٹی کے ساتھ ایڈجسمنٹ کی جس کے بدلے نجی ہاؤسنگ سوسائٹی نے اربوں روپے مالیت کی 458 کنال اراضی القادر ٹرسٹ اور بنی گالہ میں 240 کنال اراضی سابق خاتون اوّل کی دوست کے نجی ہاؤسنگ سوسائٹی کے ساتھ معاہدے پر بطور وزیراعظم عمران خان اور خاتون اول کے دستخط موجود ہیں۔

وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ سابقہ حکومت نے عوام کے پیسے کو بے دردی سے استعمال کر کے ذاتی فائدے حاصل کیے ہیں ، اس معاہدے کو صیغہ راز میں رکھا گیا ، آج وفاقی کابینہ کی منظوری کے بعد یہ معاہدہ کھولا گیا اس کی کاپیاں میڈیا کو بھی دی جارہی ہیں۔ یہ ثابت ہوگیا ہے کہ تمام معاملات میں عمران خان نے ذاتی فوائد حاصل کیے ہیں ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More