کورونا کے دوران ڈیجیٹل کرنسی کے رجحان میں اضافہ

ویب ڈیسک: دنیا بھر میں کورونا وائرس کی وبا کے دوران ڈیجیٹل کرنسی کے رجحان میں اضافہ دیکھنے میں آیا، اس وقت کروڑوں انسان کرپٹو کرنسیوں کے لین دین میں مصروف ہیں۔

رپورٹ کے مطابق جہاں لوگ کورونا سے گھر میں بند تھے وہیں کرپٹو کاروبار سے جڑ کر دن کا سکون اور رات کی نیند برباد کر رہے تھے، جو ان کی ذہنی صحت کے لیے شدید نقصان دہ ہے۔

ڈیجیٹل کرنسیوں کے کاروبار کے پلیٹ فارم ‘کرپٹو ڈاٹ کوم’ کے مطابق اس وقت دنیا بھر میں ڈیجیٹل کرنسیوں کے کاروبارمیں 221 ملین انسان شامل ہیں۔

کرپٹو کرنسیاں کے انتہائی غیر مستحکم ہونے کی وجہ سے دنیا بھر کے شہریوں کو ذہنی بے چینی کا سامنا کرنا پڑتا ہے، کرپٹو میں کئی مہینوں میں کی گئی تجارت سے کمایا گیا منافع چند ہی منٹوں میں ضائع بھی ہو جاتا ہے۔

چین کے مرکزی پیپلز بینک کے اعلان میں واضح کیا گیا کہ ملکی اقتصادی اور مالیاتی نظام میں انتشار کا باعث بننے والا کوئی بھی کاروبار یا عمل قانونی قرار نہیں دیا جا سکتا اور ایسی تمام سرگرمیاں یقینی اور فوری طور پر خلاف قانون قرار دی جاتی ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More