بدعنوانی ملکی ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے، چیئرمین نیب

اسلام آباد: چیئرمین نیب جسٹس (ر)جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب پہلی بار ان افراد کو قانون کے کٹہرے میں لایا گیا جن کو کوئی پوچھ بھی نہیں سکتا تھا، نیب کی موثر پیروی کی بدولت 179 میگاکرپشن مقدمات میں سے66میگا کرپشن مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچایا گیا ہے۔

چیئرمین نیب جسٹس (ر)جاوید اقبال نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ نیب ٹھوس شواہد کی بنیاد پر عدالتوں میں بدعنوان عناصر کے خلاف دائرمقدمات کی بھرپور پیروی کررہ ہے۔نیب کی موجودہ انتظامیہ کے دور میں 1194 ملزمان کو احتساب عدالتوں نے سزا سنائی ہے۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ بدعنوانی ملکی ترقی اورخوشحالی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے،نیب اقوام متحدہ کے انسداد بدعنوانی کنونشن کے تحت پاکستان کافوکل ادارہ ہونے کے ساتھ ساتھ احتساب سب کیلئے کی پالیسی پر سختی سے پیرا ہے تاکہ پاکستان کو کرپشن فری ملک بنانے میں مدد مل سکے۔

جسٹس (ر) جاوید اقبال کا کہنا تھا کہ نیب نے جدید فرانزک سائنس لیبارٹری قائم کی ہےجس میں ڈیجیٹل فرانزک،سوالیہ دستاویزات اور فنگر پرنٹ کے تجزیے کی سہولت موجود ہے، ان اقدامات سے نیب کی کارکردگی میں بہتری آئی ہے۔

چیئرمین نیب نےتمام نیب افسران کو ہدایت کی ہے کہ وہ پاکستان کو کرپشن فری بنانے میں اپنی کوششیں دو گنا کریں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More