پنجاب میں وزارتِ اعلیٰ کے معاملے کو سپریم کورٹ کا فل بینچ دیکھے، اعظم نذیر تارڑ

لاہور: وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ نے کہا ہے کہ پنجاب میں وزارتِ اعلیٰ کے انتخاب کے معاملے کو سپریم کورٹ کا فل بینچ دیکھ لے گا تو یہ معاملہ ہمیشہ کے لیے ختم ہو جائے گا۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ ملک میں دو اُصول لاگو نہیں ہو سکتے، لاہور رجسٹری کی دیواریں پھلانگنے کے عمل کا سپریم کورٹ نے ایکشن نہیں لیا، مقدمے کی اہمیت کو سامنے رکھتے ہوئے فل کورٹ بنایا جانا چاہیے۔

اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ یہ بات انصاف کی ہوگی کہ عدالت کا فل کورٹ اس درخواست کو سنے، امید کرتے ہیں کہ چیف جسٹس صاحب ہماری درخواست پر غور فرمائیں گے، فل کورٹ کے علاوہ اس کا کوئی حل نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ معاملے کی نزاکت ایسی ہے کہ اسے فل کورٹ کے سامنے رکھا جائے، 16 اپریل کو جب ووٹ ڈالے گئے تو اس وقت فیصلہ نہیں آیا تھا، 2015 میں سپریم کورٹ کے 8 رکنی بینج نے قرار دیا تھا کہ پارٹی ہیڈ کو ہی اختیار حاصل ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More