تحریک انصاف کے پاس ہمارے شاگرد بیٹھے ہیں، آصف زرداری

اسلام آباد: سابق صدر آصف زرداری کا کہنا ہے کہ سیاسی یونیورسٹی صرف پیپلز پارٹی کے پاس ہے۔ تحریک انصاف کے بہت سارے اسٹوڈنٹس ہماری یونیورسٹی کے ہیں۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے سابق صدر آصف زرداری نے کہا کہ اسپیکر اسمبلی کو آرڈر آف دی ڈے پر توجہ دلانا چاہوں گا کہ آج ووٹنگ کا دن ہے۔ میں بنگلہ دیش سے کہانی شروع کر کے کہاں ختم کروں۔ میں پرسنل نہیں ہونا چاہتا۔ اکثر لوگ جذباتی ہو جاتے ہیں۔ جذباتی ہو کر کہتے ہیں کہ ان کی بندوق کی نالی پر میں ہوں لیکن میں جذباتی نہیں ہوتا۔ یہاں پر کسی کا لیڈر کہتا ہے میں اس کی بندوق کی نالی پر ہوں۔ یہ شکاری بھی ہیں، کھلاڑی بھی ہیں تو پھر رونا کس بات کا ہے۔

آصف زرداری کا کہنا تھا کہ یہاں سیاسی یونیورسٹی صرف پیپلز پارٹی کے پاس ہے۔ تحریک انصاف کے بہت سارے اسٹوڈنٹس ہماری یونیورسٹی میں ہیں۔ اور اس طرف ان کے پاس بہت سے طالب علم ہے جو ہماری یونیورسٹی سے ہی گئے ہیں جو ایک دن واپس آجائیں گے۔

سابق صدر نے کہا کہ یہ کون سی ایکسپورٹ کی بات کر رہے ہیں۔ وہ تو میں چھوڑ کر گیا تھا۔ ڈالر کا ریٹ کا انہوں نے کیا حال کردیا ؟ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد اسٹاک مارکیٹ میں 700 پوائنٹس کا اضافہ ہوا۔ ان لوگوں کو پتا ہی نہیں ہے۔ انہیں سمجھ نہیں آتا یہ کیا باتیں ہیں یہ کیا راز ہے۔ کون سی عالمی سازش ہے اور کون کیا کررہا ہے۔ اگر میں نے کوئی کالم یا کتاب لکھی تو اس میں سب ذکر کردوں گا۔

آصف زرداری نے اسپیکر قومی اسمبلی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میری اتنی عرض ہے کہ آج ووٹنگ کا دن ہے ووٹنگ کروائیں۔ میں نہیں چاہتا کہ آپ کے خلاف سپریم کورٹ جائیں اور کہیں کہ اسپیکر نے عدالت کا حکم نہیں مانا اور ووٹ نہیں کرایا۔ ہمیں پاکستان میں رہنا ہے ہم نے تعلقات بھی رکھنے ہیں۔ ہم سیاسی لوگوں کے ساتھ تعلقات خراب نہیں کرتے بات کریں گے ۔سوائے ایک شخص کے ہم ہر فورس کے ساتھ بیٹھنے کو تیار ہیں۔ ہم پاکستان کی خاطر بات چیت کرسکتے ہیں۔ ماسوائے ایک شخص کے اس طرف بیٹھے بہت سے لوگوں سے بات چیت ہوسکتی ہے۔ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے آصف زرداری کو جواب میں کہا کہ میں یقین دلاتا ہوں کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق اجلاس چلاؤں گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More