آرمینیا اور آذربائیجان کے درمیان شدید سرحدی جھڑپیں، 100 فوجی ہلاک

آرمینیا اور آذربائیجان کے درمیان شدید سرحدی جھڑپیں۔ دونوں ملکوں نے جھڑپ کے لیئے ایک دوسرے کو موردالزام ٹھہرایا ہے۔ جھڑپوں میں 100 کے قریب فوجی ہلاک۔

دونوں فریقوں نے منگل کی صبح اپنی سرحد پر ہونے والی لڑائی کے لیے دوسرے کو مورد الزام ٹھہرایا۔ نگورنو کاراباخ پر 2020 کی جنگ اور روس کی ثالثی میں ہونے والی جنگ بندی کے بعد دونوں ممالک کے درمیان یہ سب سے شدید سرحدی جھڑپ ہے۔

آرمینیا کے وزیر اعظم نکول پشینیان نے کہا کہ آذربائیجانی فوج کے ساتھ جھڑپوں میں ان کے ملک کے 49 فوجی مارے گئے۔ آذربائیجان کی وزارت دفاع نے آرمینیا پر متعدد “بڑے پیمانے پر اشتعال انگیزی” کا الزام لگایا جس نے اسے جوابی کارروائی پر مجبور کیا۔ وزارت نے بعد میں اعلان کیا کہ 42 فوجی اور آٹھ سرحدی محافظ مارے گئے ہیں۔

آرمینیا اور آذربائیجان کے درمیان منگل کو لڑائی شروع ہوئی، جو جنوبی قفقاز میں ناگورنو کاراباخ کے متنازعہ علاقے پر قبضہ برقرار رکھنے کی جنگ ہے۔ جھڑپوں نے اس امکان کو بڑھا دیا کہ روس اپنی سرحدوں کے قریب ایک اور جنگ میں الجھ جائے گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More