چیف الیکشن کمشنر اسٹیبلشمنٹ کے کہنے پر لگایا، عمران خان

اسلام آباد: چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا ہے کہ سبق سیکھا ہےکہ اتحادی نہیں ہونےچاہئیں۔جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف ریفرنس دائر نہیں کرنا چاہیے تھا۔توشہ خانے سے جو کچھ لیا وہ ریکارڈ پر ہے۔ایک غیر ملکی صدر نے گھر آکر تحفہ دیا وہ بھی توشہ خانہ میں جمع کروادیا تھا۔

بنی گالامیں صحافیوں سےغیررسمی گفتگوکرتےہوئےعمران خان نےکہاشہبازشریف نے ابھی سے انجینئرنگ شروع کردی ہے۔یہ اپنے افسران لگا کرمیچ فکسڈ کریں گے ۔یہ کوشش میں ہیں کہ نواز شریف کے کیس ختم ہوں۔

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا کہ پچھلے انتخابات میں ٹکٹوں پر توجہ نہیں دی تھی اس بار ٹکٹس خود دیکھ کردیں گے۔ان کےخلاف اس وقت سازش ہوئی جب چیزیں ٹھیک ہورہی تھیں۔اس مافیا سے لڑائی تھی جو قیمتیں اوپرلےجارہی تھی۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ ایف آئی اے میں تبدیلیاں ہورہی ہیں ۔چوبیس ارب کرپشن کی تفتیش کرنےوالوں کو تبدیل کیا جارہاہے۔فرح خان کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ اس کے پاس کوئی عہدہ یا وزارت نہیں تھی وہ پیسے کیسے لےسکتی تھی۔کسی کے پاس کوئی ثبوت ہے تو سامنے لائے۔

چیئرمین پی ٹی آئی نےکہا کراچی اور پشاورمیں جتنے لوگ نکلےپاکستان میں پہلے ایسانہیں ہوا۔عمران خان نے کہا کہ چیف الیکشن کمشنرکی تعیناتی آزاد باڈی کے ذریعے ہونی چاہیے۔موجودہ چیف الیکشن کمشنر کی تعیناتی اسٹیبلشمنٹ کے ذریعے ہوئی تھی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More