عامر لیاقت کوعبداللہ شاہ غازی مزارکے احاطے میں سپردخاک کردیا گیا

کراچی:معروف مذہبی اسکالراور پی ٹی آئی کے منحرف رکن عامر لیاقت حسین کوکراچی میں عبداللہ شاہ غازی کےمزارکے احاطے میں سپردخاک کردیاگیا،عامرلیاقت کی نمازجنازہ میں سیاسی شخصیات سمیت لوگوں کی بڑی تعدادنے شرکت کی۔

معروف مذہبی اسکالراور پی ٹی آئی کے منحرف رکن عامر لیاقت حسین گزشتہ روزاپنی رہائش گاہ پر خالق حقیقی سے جالے،جس کے بعدانکےجسدخاکی کوسردخانے منتقل کردیاگیاتھا،گزشتہ روزپولیس کی جانب سےعامرلیاقت کےپوسٹ مارٹم کااصرارکیاگیاتاہم لواحقین نےفیصلہ انکے صاحبزاےکی بیرون ملک سےواپسی پرمشروط کردیا۔

ڈاکٹرعامرلیاقت کے صاحبزادے اج صبح بیرون ملک سے واپسی پہنچےاورانکے سردخانے پہچنے سےقبل ہی پولیس کی جانب سے چھپافاونڈیشن کوخط لکھ ہدایت جاری کیں گئیں کہ عامر لیاقت حسین کی لاش امانتاً سرد خانے میں رکھوائی گئی ہے، بریگیڈ پولیس کی اجازت لاش کسی کے حوالے نہ کی جائے۔

بعدازاں لواحقین اورپولیس کے درمیان معاہدہ ناکام ہونے کےبعدعامر لیاقت کی لاش کےپوسٹ مارٹم کامعاملہ عدالت جاپہنچامجسٹریٹ اور پولیس سرجن ڈاکٹر سمعیہ سرد خانے پہنچیں اورمیت کامعائنہ کرنے کےبعداسے لواحقین کے حوالے کرنےکاحکم دےدیا۔

عامر لیاقت حسین 5 جولائی 1972 کو پیدا ہوئے، اُن کی عمر 49 برس تھی۔وہ 2018 کے انتخابات میں پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے تھے، اس سے قبل 2002 تا 2007 بھی رکن قومی اسمبلی رہے۔ڈاکٹرعامرلیاقت کی نمازجناہ جامع مسجدعبداللہ شاہ غازی میں اداکی گئی،جس میں سابق گورنرسندھ عمران اسماعیل سمیت دیگرسیاسی شخصیات سمیت لوگوں کی بڑی تعدادنے شرکت کی،جس کے بعدانہیں مزارکے احاطے میں سپردخاک کردیاگیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More