تازہ ترین
عزیر بلوچ جے آئی ٹی: سندھ کا ایک وزیر معاملے سے توجہ ہٹانے کی کوشش کررہا ہے، علی زیدی

عزیر بلوچ جے آئی ٹی: سندھ کا ایک وزیر معاملے سے توجہ ہٹانے کی کوشش کررہا ہے، علی زیدی

اسلام آباد: (12 جولائی 2020) وفاقی وزیر علی زیدی نے کہا ہے کہ سندھ کا ایک منشیات فروش وزیر حقیقی معاملے سے توجہ ہٹانے کی ناکام کوشش کررہا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری پیغام میں وفاقی وزیر بحری امور علی زیدی نے عذیر بلوچ جے آئی ٹی کے معاملے پر کہا کہ عزیر بلوچ برسوں سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی تحویل میں ہے، مگر اسے استعمال کرنے والا طاقتور سیاسی ٹولہ آزاد گھوم رہا ہے۔ اس ٹولے کا نام بھی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کی رپورٹ میں درج ہے، انہیں بھی انصاف کے کٹہرے میں لانا ہوگا۔

علی زیدی نے کہا کہ میں برملا مطالبہ کرچکا ہوں کہ عزیر بلوچ کو پولیس سے لے کر رینجرز کی تحویل میں دیا جائے۔ مجھے خدشہ ہے کہ طاقتور سیاسی مجرم پولیس کی تحویل میں اسے مروا نہ دیں۔ جبکہ عزیر بلوچ نے بھی اپنے اعترافی بیان میں اپنے اس خدشے کا اظہار کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ بلدیہ فیکٹری میں 250 سے زائد معصوم لوگ مارے گئے۔ جے آئی ٹی رپورٹ میں درج ہے کہ تحقیقات کے دوران سندھ پولیس کمپرومائزڈ تھی۔ جے آئی ٹی نے تو نئے مقدمے کے اندراج کی سفارش کی تھی مگر سندھ حکومت کیوں 4 سال تک سوئی رہی؟ کیا یہ مجرموں کی باہمی رضامندی اور سمجھوتے کا معاملہ ہے؟

علی زیدی نے کہا کہ میں نے خود اور اپنے اہلخانہ کو خطرے میں ڈال کر اپنے شہر، ملک اور گینگ وارز کی بھینٹ چڑھنے والوں کی خاطر یہ قدم اٹھایا ہے۔

انہوں نے ایک دفعہ پھر یہ کہا کہ یقین کرلیں، میں یہ معاملہ سپریم کورٹ میں لے کر جاؤں گا۔ مجھے امید ہے کہ عدالت عظمیٰ شواہد کو دیکھے گی اور انصاف مہیا کرے گی۔

Comments are closed.

Scroll To Top