یہ کیسا لاڈلا ہے جس پر توہین عدالت نہیں لگتی،احسن اقبال

لاہور: وفاقی وزیر احسن اقبال کا کہنا ہے کہ عمران خان نے کونسی سلیمانی ٹوپی پہن رکھی ہے جو ان کو قانون سے بالاتر کر رہی ہے، سات سال سے ممنوع فنڈنگ کیس اور سپریم کورٹ کے بلدیاتی اداروں کے فیصلے کو جوتی کی نوک پر رکھنے کے باوجود ان کو کسی نے نہیں پوچھا یہ کس کا اور کیسا لاڈلا ہے جس پر توہین عدالت نہیں لگتی، سپریم کورٹ سے التجاح ہے کہ وہ وزیر اعلی پنجاب سے متعلق کیس کا فیصلہ فل بنچ کرے۔

پارٹی سیکرٹریٹ ماڈل ٹاون میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر احسن اقبال نے سپریم کورٹ اور الیکشن کمیشن سے سوال کیا کہ وہ کون سی طاقت ہے جو عمران خان کو انوکھا لاڈا بنا رہی ہے، کروڑوں روپے کی ممنوعہ فنڈنگ کی خرد برد کے شواہد ہونے کے باوجود فیصلہ نہیں آتا قاسم سوری ڈھائی سال حکم امتناعی پر ڈپٹی اسپیکر بنے رہے، عمران خان نے کونسی سی سلیمانی ٹوپی پہن رکھی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ڈسکہ الیکشن چوری کرنے والا اخلاقیات کا درس دے رہا ملک کو آئی ایم ایف کا غلام بنانے والا آزادی کا درس دے رہا،عمران خان کے آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدے کی قیمت ملک ادا کر رہا ہے۔ احسن اقبال نے بھی سپریم کورٹ سےمطالبہ کیا کہ وزیر اعلی پنجاب کے معاملے پر دائر درخواست کا فیصلہ بھی سپریم کورٹ کا فل بینچ کرے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More