اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی گرفتار

اسلام آباد: اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو نیب نے سپریم کورٹ کے باہر سے گرفتار کرلیا۔ سپریم کورٹ نے نیب کو مطلوب اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو نیب کے سامنے سرینڈر کرنے کا حکم دیا تھا۔

سندھ ہائی کورٹ سے ضمانت منسوخ ہونے کے خلاف اپیل میں اسپیکر سندھ اسمبلی نے ٹرائل کورٹ کے سامنے سرنڈر کرنے کی استدعا کی تھی تاہم جسٹس عمر عطا بندیال نے انہیں نیب کے سامنے سرینڈر کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت اگلے ہفتے تک ملتوی کردی تھی۔

جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی سندھ ہائی کورٹ سے ضمانت منسوخ ہونے کے خلاف اپیل پر سماعت کی۔ جسٹس عمر عطا بندیال نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو نیب کے سامنے سرینڈر کرنے کا حکم دیا۔ وکیل نے استدعا کی کہ ٹرائل کورٹ کے سامنے سرینڈر کرنے دیا جائے۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیئے کہ ٹرائل کورٹ کے سامنے سرینڈر کرنے کا حکم نہیں دے سکتے، ہم نے قانون کے مطابق چلنا ہے۔ جسٹس سجاد علی شاہ نے کہا کہ آپ پہلے نیب اتھارٹی کے سامنے سرنڈر کریں۔ سرینڈر کرینگے تو آپ کی درخواست ضمانت ٹیک اپ ہوجائے گی۔

آغا سراج کے وکیل نے کہا موکل نے عدالت کے سامنے سرینڈر کر دیا ہے۔ جسٹس سجاد علی شاہ نے کہا کہ اس طرح کے سرینڈر کو عدالت نہیں مانتی۔ سپریم کورٹ نے کیس کی سماعت اگلے ہفتے تک ملتوی کردی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More