مختلف ممالک سے آئے ہندو یاتریوں کے وفد کا پارلیمنٹ ہاؤس کا دورہ

اسلام آباد: مختلف ممالک سے آئے ہوئے ہندو یاتریوں کے وفد نے پارلیمنٹ ہاؤس کا دورہ کیا اور اسپیکر قومی اسمبلی سے ملاقات کی۔

اس موقع پر اسد قیصر کا کہنا تھا کہ اقلیتوں کا تحفظ ہماری مذہبی اور آئینی ذمہ داری ہے، پاکستان میں بسنے والے تمام شہریوں کو اپنے عقیدے اور مذہبی رسومات کے مطابق زندگی بسر کرنے کی مکمل آزادی حاصل ہے۔

مختلف ممالک سے آئے ہندو یاتریوں کے وفد نے تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اور پاکستان ہندو کونسل کے سرپرست ڈاکٹر رمیش کمار کی سربراہی میں اسپیکر قومی اسمبلی سے ملاقات۔ اس موقع پر اسپیکر قومی اسمبلی نے وفد کی پاکستان آمدپر خوش آمدید کہا۔

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا کہ پاکستان کی پارلیمان اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے ہمیشہ ان کے ساتھ کھڑی ہے،اقلیتی برادری کے ساتھ کسی بھی ناخوشگوار واقعے کی عوامی، پارلیمانی اور حکومتی سطح پر شدید مذمت کی جاتی ہے اور اس کے تدارک کے لیے فوری اقدامات بھی اٹھائے جاتے ہیں۔

اسد قیصر نے کہا کہ پاکستان بھارت سمیت تمام پڑوسی ممالک کے ساتھ خوشگوار دوستانہ تعلقات چاہتا ہے، انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام کو آزادی اظہار رائے اور مذہبی رسومات منانے پر پابندی عائد ہے، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیاں بین الاقوامی قوانین کی صریح خلاف ورزی ہے،مقبوضہ کشمیر کی عوام کو اقوام متحدہ کے چارٹر کے مطابق بنیادی انسانی حقوق دیئے جائیں، اسپیکر قومی اسمبلی نے خطے میں پائیدار امن کے قیام کے لیے مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے پر بھی زور دیا۔

اس موقع پر ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار نے پارلیمنٹ ہاؤس میں وفد کی آمد پر پرتپاک استقبال کرنے پر اسپیکر کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے اسپیکر قومی اسمبلی کا بطور کسٹوڈین آف دی ہاؤس کردار قابل تحسین ہے۔

ان کا کہناتھا کہ حکومت کی جانب سے مذہبی سیاحت کے فروغ کے لیے اٹھائے گئے اقدامات قابل ستائش ہیں،مذہبی سیاحت کے فروغ سے بین المذہب ہم آہنگی میں اضافہ ہو گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More