پنجاب حکومت کی سالانہ ترقیاتی بجٹ میں 90ارب روپے سے زائد اضافے کی تجویز

لاہور: پنجاب حکومت نے آئندہ مالی سال بجٹ۔23 2022-کے سالانہ ترقیاتی بجٹ میں 90ارب روپے سے زائد کے اضافے کی تجویز پیش کر دی ہے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے صوبے کے لئے آئندہ مالی سال کیلئے بجٹ 2022-23کے اے ڈی پی میں 75سے 100ارب روپے کے اضافے کی ہدایت کر دی ہے، آئندہ مالی سال کے سالانہ ترقیاتی پروگرام کیلئے 750ارب روپے کا تخمینہ لایا گیا ہے رواں مالی سال کا اے ڈی پی 635ارب روپے ہے جس میں 100 ارب روپے کا اضافہ کیا جائے گا کہ آئندہ مالی سال کے لئے 700 روپے 750روپے کا اے ڈی پی پر مشتمل ہو گا جو کہ صوبے کی تاریخ میں سب سے بڑا ترقیاتی بجٹ ہو گا۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ اس حوالے سے گزشتہ روز وزیر اعلیٰ پنجاب نے صوبے کے آئندہ مالی سال کے لئے پہلی بریفنگ لی اور بجٹ کی تیاری کے حوالے سے مشاورت کی۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ وزیر اعلیٰ نے حکم دیا کہ بجٹ کی تیاری اور بہتر سے بہتر بجٹ لانے کے لئے اعلیٰ سطح فنانس کمیٹی تشکیل دینے کی بھی ہدایت کی اور کہا کہ کمیٹی جس میں اراکین اسمبلی ماہرین معیشت کو شامل کیا جائے اس کا نوٹیفیکیشن آئندہ 72گھنٹوں میں ہو جانا چاہئے 7 روز کے اندر دوبارہ اجلاس کرنے کی بھی نوید سنائی گئی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پہلے مشاورتی بجٹ اجلاس میں آئندہ مالی سال کا صوبائی بجٹ 15جون سے پہلے تھی پر اتفاق ہوا جنوبی پنجاب کے لئے بجٹ میں خصوصی پیکیج دینے کے بھی ہدایت کی گئی جنوبی پنجاب کے لئے ترقیاتی بجٹ 180ارب سے بڑھا کر 200ارب کرنے پر اتفاق کیا گیا صحت ، تعلیم ، زراعت، خوراک کے بجٹ میں بھی اضافے کی تجویز آئی جس پر دوبارہ مشاورت 7 روز بعد ہو گی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More