لاہور انارکلی دھماکے کی تحقیقات میں اہم پیشرفت

لاہور: انارکلی میں ہونے والے بم دھماکے کی تحقیقات میں اہم پیشرفت ہوئی ہے، تحقیقاتی اداروں نے دہشتگردی میں ملوث دہشتگرد کو لاری اڈا پہنچانے والے رکشہ ڈرائیور کو ڈھونڈ کر گرفتار کر لیاہے تاہم رکشہ ڈرائیور کا دھماکے میں ملوث ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا۔

تحقیقات کرنے والے اداروں نے دہشتگرد کو لاری اڈا پہنچانے والے رکشہ ڈرائیور کو سی سی ٹی وی فوٹیجز کی مدد سے حراست میں لیا ہے۔ تفتیشی ذرائع کے مطابق دھماکے میں ملوث شخص ڈیوائس رکھنے کے بعد رکشے میں بیٹھا، رکشہ ڈرائیور نے دہشت گرد کو لاری اڈا کے قریب اتارا، تاہم لاری اڈا اترنے کے بعد دہشت گرد کیمروں کی رینج میں نہیں آیا۔

دہشت گرد کی لاری اڈا تک موومنٹ کیمروں سے ٹریک کی گئی۔ ابھی تک رکشہ ڈرائیور کا دھماکے میں ملوث ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا، رکشہ ڈرائیور نے بتایا کہ مبینہ دہشت گرد پنجابی میں بات کر رہا تھا۔ دوسری جانب تفشیشی ٹیموں نے بادامی باغ کے قریب بس اڈوں کی ریکارڈنگ بھی قبضے میں لے لی ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More