یوم پاکستان پر اوآئی سی کانفرنس کا انعقاد باعث مسرت ہے

ااسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پندرہ مارچ کو اسلاموفوبیا کیخلاف عالمی دن قرار دینا خوش آئند ہے، اسلام کا کسی طور بھی دہشتگردی سے کوئی تعلق نہیں، ترقی پذیرممالک کرپشن کی وجہ سے غریب ہیں۔

اسلام آباد میں منعقدہ 48 ویں او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ جب تک مسلم ممالک متحد ہو کر عالمی سمیت دیگر معاملات پر متفقہ موقف اختیار نہیں کریں گے کوئی انہیں اہمیت نہیں دے گا۔ ریاست مدینہ کے اصولوں پر چلنے والا ملک ہی خوشحال ہوگا۔ نائن الیون کے بعد اسلامو فوبیا میں اضافہ ہوا تاہم دہشت گردی کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں۔

انہوں نے کہا کہ 15 مارچ کو اسلامو فوبیا کے خلاف عالمی دن قرار دینا خوش آئند ہے، اس دن ایک انتہا پسند نے نیوزی لینڈ میں مسجد پر حملہ کر کے 50 مسلمانوں کو شہید کر دیا تھا۔ اسلام کو دہشت گردے سے جوڑنے کے جھوٹے دعوے کے باوجود غیر مسلم اسلام کی جانب راغب ہوئے۔ عمران خان کاکہنا تھا کہ طاقتور چوروں کو قانون کےکٹہرے میں نہ لانے کی وجہ سے مشکلات کا سامنا ہے، قانون سے کسی کو بالاتر نہیں ہونا چاہئے، وہ قومیں تباہ ہو جاتی ہیں جہاں کمزور کو جیل میں ڈالا جاتا ہے اور طاقتور کو چھوٹ دے دی جاتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ریاست مدینہ میں امیر اور غریب کا کوئی فرق نہیں تھا، اقلیتوں کو بھی مساوی حقوق میسر تھے۔ مغربی ممالک نے ریاست مدینہ کے اصولوں کو آج اپنا لیا ہے تو وہ خوشحال ہو گئے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ فلسطین اور کشمیر میں ہونے والے مظالم کو اجاگر کیا جائے، کشمیریوں کو 7 دہائیوں کے طویل عرصے سے حق خود ارادیت نہیں دیا جا رہا، ان کے بنیادی حقوق چھین لئے گئے ، غاصبانہ قبضے کے باوجود اسلام دنیا خاموش ہے۔ فلسطین کے مسلمانوں کے ساتھ مسلسل ظلم و ستم کا بازار گرم ہے مگر کوئی نتیجہ خیز اقدام نہیں اٹھایا جا رہا۔ انہوں نے کہا کہ جب تک مسلم دنیا ایک مشترکہ موقف نہیں اپنائے گی دنیا میں ہمیں کوئی اہمیت نہیں ملے گی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More