سابق بھارتی وزیراعلیٰ لالو پرساد کو 5 سال قید اور 60 لاکھ روپے جرمانے کی سزا

نئی دہلی: بھارتی ریاست بہار کے وزیر اعلیٰ کو کرپشن کیس میں 5 سال قید اور 60 لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی گئی ہے۔

لالو پرساد پر الزام تھا کہ انہوں نے چارے کے لیے مختص فنڈز میں سے 139 کروڑ روپے کا فراڈ کیا تھا، بھارتی میڈیا کے مطابق 1990 کے چارہ اسکینڈل کے پانچویں کیس میں سابق وزیر اعلیٰ لالو پرساد سمیت 39 افراد کو عدالت نے 15 فروری نے مجرم قرار دیکر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

تین بار ریاست بہار کے وزیراعلیٰ رہنے والے 73الہ لالو پرساد اسی اسکینڈل کے مختلف مقدمات میں دسمبر 2017 سے سزا کاٹ رہے ہیں۔ تاہم بیماری کے باعث زیادہ تر عرصہ جھارکھنڈ کے راجندر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز میں گزارا ور گزشتہ سال جنوری میں انھیں دہلی کے اسپتال منتقل کیا گیا تھا، اس کیس کا فیصلہ بھی انہوں نے اسپتال سے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے سنا۔

چارہ گھوٹالے سے جڑا ایک اور معاملہ پٹنہ کی سی بی آئی عدالت میں زیر التوا ہے۔ یہ کیس بینک بھاگلپور کے خزانے سے غیر قانونی طور پر رقم نکالنے سے متعلق ہے۔ 950 کروڑ کے چارہ گھوٹالہ میں بڑے پیمانے پر بدعنوانی شامل تھی جس میں پورے بہار میں متعدد سرکاری خزانوں سے جانوروں کے چارے کے لیے فنڈز کا غبن کیا گیا تھا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More