ایون فیلڈ ریفرنس: نیب پراسیکیوٹر کی سماعت ملتوی کرنے کی استدعا منظور

اسلام آباد: ہائیکورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس میں مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی اپیلوں میں نیب پراسیکیوٹر کی طرف سے سماعت ملتوی کرنے کی استدعا منظور کرتے ہوئے سماعت 18 جنوری تک ملتوی کردی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل دو رکنی بینچ نے ایون فیلڈ ریفرنس میں مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی اپیلوں پر سماعت کی۔ سماعت کے دوران مریم نواز اور کیپٹن صفدر اپنے صاحبزادے جنید صفدر اور پارٹی رہنماؤں کے ہمراہ جبکہ مریم نواز کے وکیل عرفان قادر جبکہ نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی عدالت پیش ہوئے۔

اس موقع پر جسٹس عامر فاروق نےعرفان قادر ایڈووکیٹ سے کہا کہ آج التواء کی درخواست آئی ہے۔ عرفان قادر ایڈووکیٹ نے کہا کہ کس کی جانب سے التواء کی درخواست آئی ہے۔ جسٹس عامرفاروق نے کہا کہ نیب پراسیکیوٹر کی طبیعت ناساز ہے، ان کے منہ کا ذائقہ چلا گیا ہے، دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر عثمان غنی چیمہ کی التواء کی درخواست دی گئی جس میں کہاگیاکہ کل سے بخار ہے، سونگھنے اور چکھنے کی حس ختم ہو گئی ہے، ڈاکٹرز کی جانب سے بیڈ ریسٹ قرنطینہ کرنے کی تجویز دی گئی ہے،سفر کرنے سے قاصر ہوں اس لیے عدالت پیش نہیں ہو سکتا، استدعا ہے کہ کیس کسی اور دن کے لیے مقرر کیا جائے۔

دوران سماعت نیب پراسیکیوٹرنے کہا کہ پراسیکیوٹر عثمان غنی کی طبیعت ناساز ہے اسی وجہ سے عدالت یش نہیں ہوسکے۔ عرفان قادر ایڈووکیٹ نے کہا کہ جو آثار بتائے جارہے ہیں وہ کوویڈ کے ہیں، اللہ خیر کرے ،نیب کی التواء درخواست پر مجھے کوئی اعتراض نہیں ہے، عدالت نے بغیر کاروائی سماعت18 جنوری تک کیلئے ملتوی کردی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More