چین نے چاند پر پانی ڈھونڈ لیا

بیجنگ: چین نے چاند پر پانی کے آثار ڈھونڈ لیے ہیں، چینی سائنسدانوں نے چٹانی نمونوں میں یعنی پانی کی نشاندہی کی ہے۔

چنگ اے۔5 کی چاند کی سطح پر اترنے والی گاڑی کے جمع کردہ چٹانی نمونوں سے یہ تحقیق سامنے آئی ہے، نیچر کمیونیکیشن جریدے کی اشاعت کے ایک مقالے میں بتایا گیا ہے کہ مذکورہ چاند گاڑی دسمبر 2020 میں چاند پر اتری اور ریگولیٹ کے نام سے پہچانی جانے والی 1،7 کلو گرام لونر مٹی اور چٹانی ٹکڑوں کو جمع کیا۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ٹیلی اسکوپک اور سیٹلائٹ مشاہدے سے ثابت ہوتا ہے کہ چاند پر پانی چٹانوں میں ہائیڈروکسل یا پھر H20 کی شکل میں پایا جاتا ہے۔ سائنس دانوں کو امید ہے کہ مستقبل میں دنیا کے سیٹلائٹ کو کالونی بنانے کے لئے خلاء باز اپنے لئے پانی اور آکسیجن کی پیداوار کے لئے ماحول سے مالیکیولر آکسیجن اور ہائیڈروجن کی کشید کر سکیں گے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More