دادو میں خوفناک آتشزدگی، 4 بچوں سمیت 9 افراد جھلس کر جاں بحق

دادو کی تحصیل خیرپورناتھن شاہ میں مٹی کے طوفان نے تباہی مچا دی، مختلف مقامات پر آتشزدگی سے ایک سو سے زائد گھر جل گئے۔

آگ میں جھلس کر 4 بچوں سمیت 9 افراد جاں بحق ہوگئے۔ آگ لگنے سے 200 سے زائد جانور بھی ہلاک ہوگئے ہیں۔

نواحی گاؤں فیض محمد چانڈیو میں مٹی کے طوفان سے ایک گھر میں لگنے والی آگ نے سو سے زائد گھروں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ پولیس کے مطابق آگ میں جھلس کے 4 بچے موقع پر ہی جاں بحق اور 8 زخمی ہوگئے۔

تمام زخمیوں کو لاڑکانہ اسپتال منتقل کیا گیا ہے، جہاں زخموں کی تاب نا لاتے ہوئے مزید 4 افراد چل بسے، اسسنٹ کمنشر مہڑ واقعہ کے اٹھارہ گھنٹے بعد پہنچے تو متاثرین نے ان کا گھیراو کرلیا اور احتجاج کیا۔ بعد میں پولیس اور رینجرز کے اہلکاروں نے متاثرہ گاؤں میں امدادی کام شروع کردئیے۔

وزیراعظم شہبازشریف نے تحصیل میہڑ کے دو دیہات میں آگ لگنے کے واقعے پر اظہار افسوس کیا ہے ۔ انہوں نے دیہات کے مکینوں اورمتاثرین سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ متاثرین کی امداد کے لئے وفاقی حکومت اقدامات کرے گی، وزیر اعظم نے کہا سندھ کی صوبائی حکومت سے بھی متاثرین کی مالی امداد کے لئے بات کروں گا۔ شہباز شریف نے این ڈی ایم اے اور متعلقہ حکام کو متاثرہ خاندانوں کی بحالی کیلیے بھرپور مدد کی ہدایات دے دیں۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے بھی آگ لگنے کے واقعے میں معصوم جانوں کے ضیاع پردکھ کا اظہار کیا ۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ خاندانوں کے دکھ میں برابر کا شریک ہوں ۔ بلاول بھٹو نے کہا کہ پارٹی کے مقامی عہدیدار اور کارکن غمزدہ خاندانوں کی ہر ممکن امداد کریں۔

دوسری جانب پی ڈی ایم اے نے متاثرین کے لیے امداد ی سامان بھجوا دیا، سامان میں پانچ سو ٹینٹ، پندرہ سو کمبل، ایک ہزار فولڈنگ بیڈ ، ایک ہزار تکیے، نو سو بیڈ شیٹس شامل ہیں۔ سامان میں ایک ہزار مچھر دانیاں ، پانچ سو واٹر کولر ، چار سو میٹریس اور پانچ سو کچن سیٹ شامل ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More