فیٹف معاملے پر جشن منانا قبل از وقت، کوششیں جاری رکھنا ہوں گی، حناربانی

اسلام آباد: وزیر مملکت حنا ربانی کھر کا کہنا ہے کہ خوشی ہے ایف اے ٹی ایف نے پاکستان کو کلیئر کر دیا ہے۔ معاملے پر جشن منانا قبل از وقت ہوگا۔ کوششیں جاری رکھنا ہوں گی۔ ایف اے ٹی ایف گرے لسٹ سے نکلنے کے بعد معیشت پر اچھے اثرات مرتب ہوں گے۔

وزیرمملکت خارجہ امور حنا ربانی کھر کا کہنا ہے کہ ایف اے ٹی ایف نے اپنے اجلاس میں پاکستانی اقدامات کا جائزہ لیا۔دہشتگردوں کی مالی معاونت اور منی لانڈرنگ روکنےکےلیے اقدامات پر عمل سرفہرست تھے۔فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے پاکستان کے دونوں ایکشن پلان کو مکمل قرار دیا،خوشی ہے ایف اے ٹی ایف نے پاکستان کو کلیئر کر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ پاکستان کے گرے لسٹ سے نکلنے کا عمل شروع ہوچکا۔ امید ہے اکتوبر تک گرے لسٹ سے نکلنے کا عمل مکمل ہوجائے گا۔پاکستان کی جانب سے تمام شرائط پوری کرنے کی کوششوں کو تسلیم کرلیاگیا۔ایف اے ٹی ایف نے بیک وقت 2ایکشن پلان دیئے۔پاکستان دیگر ممالک کے لیے بھی ماڈل کنٹری بنے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ ایف اے ٹی ایف گرے لسٹ سے نکلنے کے بعد معیشت پر اچھے اثرات مرتب ہوں گے۔مشکل حالات میں متحد قوم بن کر ہم نے کام کیا۔ایف اے ٹی ایف معاملے پر جشن منانا قبل از وقت ہوگا ۔ابھی تو گرے لسٹ سے نکلنے کا عمل شروع ہوا ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ اس میں شک نہیں کہ فیٹف کی شرائط مشکل تھیں۔ہماری کامیابی 4 سال کے مشکل سفر کا نتیجہ ہے۔حکومتیں آتی جاتی رہتی ہیں مگر ریاست نے جو کام کیا و ہ قابل تعریف ہے۔پاکستان اس رفتار کو جاری رکھنے اور معیشت کو فروغ دینے کے عزم کا اعادہ کرتا ہے۔

انہوں نے بتایا ہے کہ فیٹف نےکہا پاکستان نے دہشتگردوں کی مالی معاونت اور منی لانڈرنگ روکنےکےلیے محنت کی۔فیٹف نےکہا پاکستان نےشرائط مکمل کرنے کےلیے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔فیٹف کے مطابق رکن ممالک کی جانب سے پاکستان کی کارکردگی کی تعریف کی گئی ۔اب پاکستان کےذمہ کوئی اقدامات زیرالتوا نہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ پہلے ایکشن پلان کی تکمیل میں وقت لگا مگر دوسرا جلد مکمل کیا گیا۔فیٹف اجلاس کے دوران سائیڈ لائن پر مختلف رہنماوں سے ملاقاتیں ہوئیں۔پاکستان کا فیٹف اور عالمی برادری سے تعاون معیشت کو بہتر بنانے کی کوششوں کا حصہ ہے۔قومی اور صوبائی اداروں نے بھی اپنا کام بہترین انداز میں کیا۔ ان کا کنا ہے کہ ہمارے لیے یہ سفر کا اختتام نہیں بلکہ آغاز ہے ،ہمیں کوششیں جاری رکھنی ہیں۔پاکستان کی کوشش ہوگی دوبارہ کبھی گرے لسٹ میں نہ جائے۔ خواہش ہے پاکستان کو ذمہ دار ملک کے طورپر دیکھا جائے۔پاکستان نے اپنا مقدمہ بہترین انداز میں لڑا۔

انہوں نے کہا ہے کہ حکومت اور پارلیمنٹ نے پلان سے متعلق قانون سازی کی۔ ایف اے ٹی ایف ٹیم پاکستان کا دورہ کر کے شرائط کی تکمیل کامزید جائزہ لے گی۔ فیٹف ٹیم قانون سازی کے اقدامات اورسیکریٹریٹ کا معائنہ کرے گی۔ ان کا کہنا ہے کہ فیٹف ٹیم آئے گی تو اس کو اپنے کام کرنے کا موقع دیاجائے گا،اس کوسیاسی رنگ نہ دیاجائے۔فیٹیف سے نکلنے کا کریڈٹ جو چاہے لے سکتا ہے لیکن جیت پاکستان کی ہوئی ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More