کورونا کیسز میں اضافہ، سندھ حکومت کے اہم فیصلے

کراچی: سندھ حکومت نے شہر قائد میں کرونا کے بڑھتے کیسز کے پیش نظر اہم فیصلے کرلئے ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ کی زیر صدارت کرونا ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا، اجلاس میں محکمہ صحت اور ماہرین کرونا کی موجودہ صورتحال سے متعلق وزیراعلیٰ کو تفصیلی بریفنگ دی۔ سندھ ٹاسک فورس اجلاس میں متفقہ طور پر فیصلہ کیا گیا کہ صوبے بھر میں اسکول کھلے رہیں گے اور تعلیمی سلسلہ جاری رہے گا۔ تمام شادی ہالز، مارکیٹوں اور عوامی مقامات پر ماسک پہننا لازمی قرار دے دیا گیا ہے، انتظامیہ کو ویکسی نیشن کارڈ کا ریکارڈ چیک کرنا لازمی ہوگا۔

سندھ ٹاسک فورس کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ جو سرکاری افسران فیس ماسک کے استعمال کو یقینی نہیں بنائیں گے ان پر جرمانہ عائد کیا جائے گا، اجلاس میں تجویز دی گئی کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والے سرکاری افسران کی ایک دن کی تنخواہ کاٹی جائے۔ وزیراعلیٰ سندھ کی زیر صدارت ہونے والے کرونا ٹاسک فورس اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اومیکرون کیسز کی حقیقی تعداد معلوم کرنے کے لئے تمام سرکاری و نجی اسپتالوں کا سروے کیا جائے گا، سروے میں اسپتالوں کی گنجائش کا جائزہ لیا جائے گا۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا کہ اسپتالوں میں کتنی گنجائش ہے؟ اور مزید کتنی ضرورت ہے؟ بتایا جائے۔ کرونا ٹاسک فورس میں فوری طور پر شادی ہالوں کی بندش کی تجویز کو زیر غور نہیں لایا گیا البتہ شادی تقریبات میں کھانہ باکس میں دینے کی ہدایت دی گئیں ہیں، جس پر فوری عملدرآمد کرایا جائے گا۔

سندھ حکومت نے ویکسی نیشن مہم کو صوبے میں تیز کرنے کا فیصلہ کیا ہے، وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ کرونا کیسز میں اضا فہ احتیاطی تدابیر نہ اپنانے کا نتیجہ ہے، عوام تعاون کریں گے تو جاری کرونا لہر پر بھی کنٹرول ہوجائے گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More