پشاور میں گیس کی لوڈشیڈنگ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا

پشاور: ملک بھر کی طرح پشاور اور اس کے مضافات میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا ہے، گیس کی لوڈ شیڈنگ اور سی این جی اسٹیشنز بند ہونے کے باعث عوام پریشان ہیں۔

پشاور اور اس کے مضافات میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوتے ہی گیس کے بحران میں بھی اضافہ ہوگیا۔ شہر کے اکثر علاقوں میں گیس ناپید ہونے سے شہریوں کو کھانے اور ناشتوں کے لالے پڑگئے۔ غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور کم پریشر کے باعث عوام بھوکے رہنے پر مجبور ہوگئے۔ شہری کہتے ہیں کہ حکومت کے پاس غریبوں کو رلانے کے علاوہ اور کوئی کام نہیں۔

پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے ضلعی انتظامیہ پشاور کی جانب سے گیس کی لوڈ شیڈنگ اورکم پریشر کےباعث بند کیے جانےوالے سی این جی سٹیشنوں کو ہفتے میں اب تین دن صبح نو سے شام چار بجے تک کھولنے کی اجازت دے دی ہے۔

شہر کے اکثر حصوں میں گیس کی کمی نے گھروں کے چولہے ٹھنڈے کر دیے۔ گیس کے بحران کے باعث ایل پی جی کی قیمیتیں بھی بڑھ گئی جس کی وجہ سے نانبائیوں کی مشکلات میں بھی اضافہ ہو گیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More