ڈبلیو ایچ او کی طرف سے ایمبولینسز ہدیہ کرنے کا کیس، وزارت خارجہ سے جواب طلب

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے ڈبلیو ایچ او کی طرف سے ایمبولینسز ہدیہ کرنے سے متعلق کیس میں وزارت خارجہ سے جواب طلب کرلیا۔عدالت نے سرکاری وکیل کی مہلت کی استدعا منظور کرلی ۔جسٹس اعجازالاحسن نے استفسار کیا کہ وزارت خارجہ بتائے ڈبلیو ایچ او کو کن معاملات پر حکومت نے استثنیٰ دے رکھا ہے؟؟۔

جسٹس اعجاز الاحسن کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔دوران سماعت جسٹس اعجازالاحسن کا کہنا تھا کہ ڈبلیو ایچ او نے نجی فرم سے 31 ایمبولنسز،2 آرمرڈ گاڑیاں لے کر پاکستان کو گفٹ کیں،نجی فرم کی سروسز کے اخراجات کون ادا کرے گا؟، حکومت پاکستان نے ڈبلیو ایچ او کو استثنیٰ دے رکھا ہے؟۔ان حالات میں تھرڈ پارٹی کس کیخلاف واجبات کا دعوی کرے؟۔

ڈبلیو ایچ او کے وکیل نے بتایا کہ ڈبلیو ایچ او کو حکومت پاکستان نے ایسے معاملات پر استثنیٰ دے رکھا ہے،ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے استدعا کی کہ وزارت خارجہ کا مؤقف لینے کیلئے مہلت دی جائے۔عدالت نے مہلت دیتے ہوئے سماعت 29 اکتوبر تک ملتوی کردی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More